ڈاکٹروں کی لاپرواہی سے حاملہ عورت کی مشتبہ حالت میں موت

Share Article
pregnant women

یوپی کے نوئیڈا نیو اسپتال میں علاج کے دوران ایک عورت کی مشتبہ حالت میں موت ہوگئی ہے۔ اس معاملے میں اس کے سسر نے اسپتال کے ڈاکٹروں کے خلاف لاپرواہی کی وجہ سے موقت کا معاملہ درج کرایا ہے۔

 

 

آئی ایس بی چندرکلا کے گھر سی بی آئی کا چھاپہ

 

یوپی کے نوئیڈا نیو اسپتال میں علاج کے دوران ایک عورت کی مشتبہ حالت میں موت ہوگئی ہے، اس معاملے اس کے سسر نے اسپتال کے ڈاکٹروں کے خلاف لاپرواہی کی وجہ سے موقت کا معاملہ درج کرایا ہے۔ عورت حاملہ تھی اوراس کا ڈی این سی کرانے کے لیے اسے اسپتال میں داخل کرایا گیا تھا۔

 

کڑاکے کی ٹھنڈ میں آپ کو ٹرین سے سفرکرنا تھوڑا بھاری پڑسکتا ہے، جانیں کیوں؟

 

پولیس سپرنٹنڈنٹ نگر شریتابھ پانڈے نے بتایا کہ سیکٹر 55میں رہنے والے چارٹیڈ اکائونٹینٹ کپل بھاٹیہ کے جمعرات کو تھانہ سیکٹر49میں رپورٹ درج کرائی ہے کہ ان کی بہو30سال آکتا بھاٹیہ کو ایک سال پہلے ہی بیٹا پیدا ہوا تھا۔ اس بیچ وہ دوبارہ سے حاملہ ہو گئی۔ وہ دوماہ کی حاملہ تھی۔ دو بچوں کے بیچ تین سال کم وقت ہونے کی وجہ سے انہوں نے ڈاکٹروں کی صلاح پر ڈین این سی کرانے کا فیصلہ لیا۔

 

بہارمہاگٹھ بندھن :سیٹوں کی تقسیم میں مانجھی -کشواہاآمنے سامنے

 

انہوں نے بتایا کہ عورت ڈاکٹرو کی دیکھ بھال میں 31دسمبر کو ان کی بہو کو سیکٹر50کےنیو اسپتال میں ڈاخل کرایا گیا۔ الزام ہے کہ ڈاکٹروں نے عورت کا ٹھیک طریقے سے علاج نہیںکیا۔ جس وجہ سے آپریشن تھیٹر میں ہی اس کی موت ہوگئی۔علاقائی افسر نے بتایا کہ ڈاکٹروں نے مرنے والی کے پریواروں کو بتایا کہ اسے دل کا دورا پڑا، جس کی وجہ سے ان کی موت ہو گئی جب کہ مرنے والی کے پریواروں کا کہنا ہے کہ اس کی موت کی وجہ یہ ہے کہ ڈاکٹروں نے اسے دوائی کا اوورڈوج دیا۔ علاقائی افسر نے بتایا کہ گھٹنا کی رپورٹ درج کر پولیس معاملہ جانچ کررہی ہے۔ مرنے والی سیکٹر62کے ستیم کالج میں پروفیسر تھی۔

Share Article

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *