سی بی آئی چیف عہدہ سے ہٹائے جانے کے بعد آلوک ورما نے توڑی چپی

Share Article
verma
عدالت عظمیٰ یعنی سپریم کورٹ کے فیصلے محض 36گھنٹے بعدوزیراعظم نریندرمودی کی صدارت والی ایک ہائی پاورسلیکشن کمیٹی کی جانب سے سی بی آئی چیف عہدہ سے ہٹائے جانے پرآلوک ورما نے اپنی چپی توڑی ہے۔سی بی آئی چیف عہدہ سے ہٹائے گئے آلو ک ورما نے کہاکہ جھوٹے ، غیرثابت شدہ اوربیحدہلکے الزامات کوبنیاد بناکر ٹرانسفرکیاگیاہے۔ہائی پاور سیلیکشن کمیٹی کی جانب سے سی بی آئی ڈائریکٹر کے عہدے سے ہٹائے جانے کے بعد آلوک ورما نے دعوی کیا ہے کہ ان کا تبادلہ ان کی مخالفت میں رہنے والے ایک شخص کی طرف سے لگائے گئے جھوٹے ،فرضی الزاموں کی بنیاد پر کیا گیا ہے۔ آلوک ورما نے کہاکہ یہ الزام اس ایک شخص نے لگائے ہیں، جوان سے بغض رکھتاہے۔
آپ کوبتادیں کہ ورماکو کمیٹی نے فائر سروسز اینڈ ہوم گارڈ کا ڈائریکٹر جنرل مقرر کیا ہے۔آلوک ورما پر رشوت خوری سے لیکر جانوروں کی اسمگلنگ کرنے والوں کی مدد کرنے کا الزام ہیں۔پی ایم مودی کی قیادت والی سلیکشن کمیٹی نے بد عنوانی اور کام کاج میں لاپرواہی برتنے کے الزام میں جمعرات کو ورما کو عہدے سے ہٹا دیا۔ا س معاملے میں چپی توڑتے ہوئے آلوک ورما نے جمعرات کی دیر رات پی ٹی آئی کو جاری ایک بیان میں کہا کہ بدعنوانی کے ہائی۔پروفائل معاملوں کی جانچ کرنے والی اہم ایجنسی ہونے کے ناطے سی بی آئی کی آزادی کو محفوظ رکھنا چاہئے۔ورما نے کہاکہ اسے باہری دباؤ کے بغیر کام کرنا چاہئے۔ میں نے ایجنسی کی سالمیت کو برقراررکھنے کی پوری کوشش کی جبکہ اسے برباد کرنے کی کوشش کئے جارہے ہیں ۔اسے مرکزی حکومت اور سی وی سی کے 23 اکتوبر 2018 کے احکام میں دیکھاجا سکتا ہے جو بغیر کسی اختیار کے دئے گئے تھے اور جنہیں رد کر دیا گیا۔ورما نے اپنے اوپرلگے الزامات کوفرضی اوربے بنیادبتایا۔
Share Article

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *