پھینکے گئے سکوں کا مالک کون؟ میئر یا چرچ

Share Article

اٹلی کے شہر روم میں واقع تریوی فوارے سے ہر سال تقریباً ڈیڑھ ملین یورو مالیت کے سکے نکالے جاتے ہیں جو عموماً غریبوں کی مدد کرنے والی ایک مسیحی فلاحی تنظیم کو عطیہ کر دیے جاتے ہیں۔مگر اب شہر کی میئر ورجینیا راگی چاہتی ہیں کہ یہ رقم شہر کے بگڑتے انتظامی ڈھانچے پر خرچ کی جائے۔ادھر مسیحی فلاحی تنظیم کریتاس کا کہنا ہے کہ آمدنی کی یہ کمی غربا کے لیے شدید نقصان دہ ہو گی۔
تریوی فوارے 300 سال پرانے ہیں اور ہر سال لاکھوں سیاح یہاں آتے ہیں۔ اس میں سکے پھینکنے کی روایت فرینک سناترا کی 1954 کی فلم فلم تھری کوائنز ان دی فاؤنٹین کے بعد سے پڑی ہے۔
شہر کی انتظامیہ نے اس تبدیلی کی منظوری دے دی ہے اور اسے اپریل سے لاگو ہونا ہے تاہم سوشل میڈیا پر بہت سے اطالوی صارفین نے ضلعی انتظامیہ سے اپیل کی ہے کہ وہ اس فیصلے پر نظرِ ثانی کرے۔میئر راگی نے 2016 میں روم کا کنٹرول سنبھالا اور ان کا تعلق اسٹیبلشمنٹ مخالف فائیو سٹار پارٹی سے ہے جس نے گذشتہ سال حکومتی اتحاد بنایا ہے۔

Share Article

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *