مسلم عورتوں کو بال کھلا رکھنے کی اجازت نہیں، جاری ہوا فتویٰ

Share Article

ہمیشہ تنازع میں رہنے والے دارالعلوم دیوبند نے مسلم عورتوں کو لے کر ایک اور عجیب و غریب فتوی جاری کیا ہے۔ دیوبند کے دارالعلوم کے مفتی نے نیوز چینل پر اینکر عورتوں کو لے کر بڑا بیان دیا ہے۔ مفتی نے کہا کہ نیوز چینل پر جو مسلم عورتیں اینکریں یا رپورٹینگ کرتیہیں۔ انہیں اپنے سر پر اسکارف باندھ کر اینکرینگ اور ررپورٹنگ کرنی چاہئے کیونکہ اسلام میں عورتوں کو بالوں کو کھلا رکھنے کی اجازت نہیں ہے۔ یہ فتویٰ مسلم اتحاد ملت کے ریاستی صدر مفتی احمد نے جاری کیا۔

 

 

بہاراین ڈی اے سیٹ شیئرنگ:صلح کی راہ پرایل جے پی -بی جے پی

 

 

مفتی نےکہا کہ یوں تو اسلام میں کسی بھی جائز روزگار کو کرنے کی لیے عورتوں اور مردوں میں منائی نہیں ہے اور نہ ہی کوئی چھوا چھوت ہے گھر کی ضرورتوں کو پورا کرنے کئے لیے شریعت نے سب کو اس کی اجازت دی ہے لیکن کسی بھی کام کے نام پر اسلام کی تمام تاکیدوں کو ماننا بھی مسلم عورتوں کے لیے بے حد ضروری ہے۔

 

 

سہراب الدین انکاؤنٹرمعاملے میں سبھی 22پولس اہلکار بری

 

اس عجیب وغریب فتوے کے بعد راسٹریہ مہیلا آیوگ نے دارالعلوم دیوبند کے مہتمم کو نوٹس جاری کیا ہے کہ اس فتوے پر ان کا جواب مانگاہے۔ اس کے علاوہ راسٹریہ مہیلا آیوگ نے اس فتوے پر بھی جواب مانگا ہے جس میں شادی جیسے پروگرام میں عورت اور مرد کی ایک ساتھ کھانا کھانے کو غیر اسلامی بتایا گیا تھا۔ آیوگ کی صدر ریکھا شرما کی طرف سے لکھے گئے خط میں اسے توہین اور ناقابل قبول بتایا گیا ہے۔

Share Article

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *