کینسر کی شناخت سونگھ کر 


وسکونسن کی رہائشی 52 سالہ ہرفل کا کہنا ہے کہ 2013 میں اس کی پالتو کتیا سیرا اس کے پیٹ پر ناک رکھی اور سونگھنے لگی۔ ہرفل نے سوچا کہ اس کے کپڑوں پر کچھ چیز گر گئی ہے، جسے سیرا سونگھ رہی ہے۔ کچھ دیر بعد سیرا نے ہرفل کے پیٹ کو دوسری اور تیسری بار سونگھا۔اس کی اس عجیب حرکت کو دیکھ کر ہرفل پریشان ہوئی پھر اس نے ایک ڈاکٹر سے وقت لیا اور معلوم کرنے کی کوشش کی کہ سیرا کیا سونگھ رہی تھی۔ ایک گائناکالوجسٹ نے ہرفل کو بتایا کہ اس کے رحم میں سسٹ (فاسد مادوں کی تھیلی) ہے۔ گائناکالوجسٹ نے ہرفل کو کچھ درد کش ادویات بھی دیں۔ اس کے بعد جب ہرفل گھر آئی تو سیرا نے پھر سے عجیب و غریب برتاؤ شروع کر دیا۔
سیرا ہرفل کی الماری میں گیند بن کربیٹھ گئی۔سیرا کے برتاؤ سے پریشان ہرفل پھر سے گائناکالوجسٹ کے پاس گئی، جس نے تصدیق کی کہ یہ تیسرے ا سٹیج کا رحم کا کینسر ہے۔ ہرفل کو کینسر کی تشخیص 11 نومبر 2013 کو ہوئی تھی۔ علاج کے بعد اپریل 2014 میں ڈاکٹروں نے ہرفل کو کینسر فری قرار دے دیا۔
بدقسمتی سے کینسر دوسری اور تیسری بار بھی واپس آ گیا۔ 2015 اور 2016 میں بھی ہرفل کو جسمانی طور پر پہلے کی طرح محسوس ہوا اور سیرا کی حالت بھی بھی پہلے جیسی ہوگئی۔ طبی معائنے کے بعد پتہ چلا کہ دوسری بار ہرفل کو جگر اور تیسری بارپیڑو میں کینسر ہوا۔
ڈاکٹر ڈیوڈ کوشہنر کا کہنا ہے کہ سیرا کا عجیب و غریب برتاؤ کسی بھی طرح اتفاقی نہیں ہو سکتا۔ بلاشبہ کئی نسل کے کتے اپنے سونگھنے کی حس سے کینسر کی 98 فیصد درست تصدیق کر سکتے ہیں

Share Article

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *