سیتا مڑھی فرقہ وارانہ فساد:نتیش حکومت میں لاء اینڈ آرڈر ناکام:قاری صہیب 

qari-suhaib
گزشتہ20 اکتوبر کو بہار کے ضلع سیتا مڑھی میں ہوئے فرقہ وارانہ فساد کو لیکر راشٹریہ جنتا دل کے ریاستی یوتھ صدر قاری صہیب نے سخت رد عمل کا اظہار کرتے ہوئے ریاستی سرکار اور ضلع انتظامیہ کو آڑے ہاتھوں لیاہے۔گذشتہمیڈیا سے بات کرتے ہوئے ریاستی صدر نے ضلع انتظامیہ پر سستی برتنے اور دنگائیوں کو کھلی چھوٹ دینے کا الزام عائد کیا۔
انہوں نے کہا کہ بہار میں لاء اینڈ آرڈر کی حالت بے حد خستہ ہے سرکار سو رہی ہے اور پولیس شراب ہوم ڈلیوری کرنے میں لگی ہے۔انہوں نے کہا کہ سیتامڑھی میں جس طرح پولیس کی سرپرستی میں اقلیتی طبقے کے لوگوں کو زندہ جلایا گیا انکے دکانوں اور مکانوں کو نذر آتش کردیا گیا وہ انسانیت پر بدنما داغ، پولیس کی گھناونی سازش،اور نتیش حکومت کی ناکامی کا جیتا جاگتا ثبوت ہے۔
انہوں نے مزید کہا کہ اپوزیشن لیڈر شری تیجسوی یادو کے سنگیان میں ساری باتیں رکھی گئی ہے انہوں نے کہا ہے کہ اس حساس معاملے کو لیکر گورنر بہار، اور دوسری اپوزیشن پارٹی کے لیڈران سے ملکر ملزمین کی گرفتاری اور داغدار پولیس آفیسر کے خلاف سخت سے سخت کاروائی کرنے کا مطالبہ کریں گے ۔
قاری صہیب نے کہا کہ ہم اس سلسلے میں نتیش سرکار سے مانگ کرتے ہیں کہ جلد سے جلد اس معاملے کی جانچ ہائی کورٹ کے ریٹائرڈ جج کی سرپرستی میں ایک ہائی لیبل جانچ کمیٹی تشکیل دے اور مجرمین، اور جو پولیس اہلکار اس پورے معاملے میں ملوث ہیں اس کی جانچ کرکے ملزمین کو جلد سے جلد کیفرکردار تک پہونچائیں۔ انہوں نے کہا کہ سیتامڑھی کے ہمارے راشٹریہ جنتادل کے یوتھ صدر ، ایم ایل اے اور دیگر لیڈران لگاتار اس پر نظر رکھے ہوئے ہیں اور ضلع انتظامیہ پر دباو بنائے ہوئے ہیں تاکہ مزید ملزمین کی گرفتاری کو ممکن بنایا جاسکے.انہوں نے کہا کہ جب تک انصاف کے عمل کو پورا نہی کرلیا جاتا ہم اسکے خلاف آواز اٹھاتے رہیں گے اور انتظامیہ کو چین و سکون سے بیٹھنے نہیں دیں گے۔
Share Article

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *