کٹھوعہ معاملہ:متاثرہ خاندان نے وکیل دپیکاراجاوت کو کیس سے ہٹایا

rajawat
کٹھوعہ میں اجتماعی آبروریزی کے بعد قتل کیاگیا آٹھ سال کی بچی کے اہل خانہ نے خاتون وکیل دپیکا راجاوت کوہٹانے کا فیصلہ کیاہے۔کٹھوعہ متاثرہ بچی کے والدنے کہاکہ دپیکاراجاوت عدالت میں سنوائی دوران بمشکل ہی حاضرہوتی ہیں۔بدھ کو پٹھان کوٹ میں ٹرائل کورٹ میں دائرعرضی میں متاثرہ کے والد نے کہاکہ راجاوت اب معاملے میں وکالت نہیں کریں گی۔ کورٹ میں دائرعرضی کوکورٹ نے منظورکرلیاہے۔
خیال رہے کہ وکیل دپیکاراجاوت نے خاندان کی طرف متاثرہ کا کیس لڑنے کیلئے پہل کی تھی، جس کے بعد وہ سرخیوں میں آگئی تھیں۔اہل خانہ کا کہناہے کہ وہ راجاوت کوان کی طرف سے جان کا خطرے کا حوالہ دینے، کیس میں کم دلچسپی لینے اورعدالت میں نہ آنے کے چلتے ہٹارہے ہیں۔ادھر راجاوت نے میڈیا کوبتایاکہ جب وہ معاملے سے جڑی ہیں تب سے انہیں جان سے مارنے کی دھمکیاں مل رہی ہیں۔
آٹھ سالہ بچی کے والد نے بدھ کویہاں نامہ نگاروں سے بتایاکہ عدالت کے ذریعے معاملے میں ابھی تک 100بار سنوائی ہوچکی ہے اورسنوائی کے دوران قریب 100گواہوں سے پوچھتاچھ کی جاچکی ہے لیکن راجاوت متاثرہ کنبہ کی طرف سے صرف بارہی پیش ہوئی ہیں۔
Share Article

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *