نوٹ بندی کے دوسال: ڈاکٹرمنموہن سنگھ کا پی ایم مودی پرحملہ

manmohan-singh
نوٹ بندی کے دوسال پورے ہوچکے ہیں۔جہاں مودی سمیت تمام بی جے پی لیڈران اس کے فائدے شمارکرارہے ہیں۔ وہیں اپوزیشن اسے پوری سے ناکام اورآفت بتارہاہے۔سابق وزیراعظم اورماہراقتصادیات ڈاکٹرمنموہن سنگھ نے کہاکہ نوبندی کے زخم وقت کے ساتھ گہرے دکھ رہے ہیں۔انہوں نے کہاکہ ’’ بغیر سوچے سمجھے نریندرمودی سرکار نے نوٹ بندی کا جوفیصلہ لیاتھا آج اس کی دوسری سالگرہ ہے۔ہندوستانی معیشت اورسماج کے ساتھ کی گئی اس بتاہی کا اثراب سبھی سامنے صاف ہے‘‘۔انہو ں نے کہاکہ نوٹ بندی سے ہندوستان کی معیشت اورسماج میں ماحول پیدا کیاگیا اسے ہرکوئی محسوس کررہاہے۔ نوٹ بندی سے ہرکوئی چاہے وہ کسی عمر، دھرم یا پیشے کا ہو سبھی متاثرہوئے۔انہوں نے حکومت سے کہا کہ وہ ہندوستانی معیشت میں یقین اور شفافیت کو بحال کرے۔
نریندر مودی حکومت کے ذریعہ 2016 میں نوٹوں کی منسوخی پر انہوں نے کہا کہ ہندوستانی معیشت اور سماج پریہ پوری طرح سے واضح ہوچکاہے کہ نوٹوں کی منسوخی سماج کے ہر شخص ،ہر عمر ،ہر صنف ،ہر مذہب اور کسی بھی کاروبار سے تعلق رکھنے والے لوگوں پر بلا تفریق اثر انداز ہوئی ہے۔ڈاکٹرمنموہن سنگھ نے ایک بیان میں کہا کہ مودی سرکار اب ایساکوئی اقتصادی قدم نہیں اٹھاناچاہئے جس سے معیشت کے تناظر میں غیر یقینی صورتحال کی صورتحال پیدا ہو۔ انہو ں نے کہاکہ نوٹ بندی سے ہرشخص متاثرہواہے۔ ملک کے مجھولے اورچھوٹے کاروبار اب بھی نوٹ بندی کی مار سے ابھرنہیں پائے ہیں۔
Share Article

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *