اسکول میں مذہب کے نام پرتقسیم،ہندو-مسلم طلباکے الگ الگ سیکشن

students-demo-photo
قومی راجدھانی دہلی کے ایک سکول میں مذہب کی بنیادپرکلاس سیکشن بنانے کامعاملہ سامنے آیاہے۔دراصل ،شمالی دہلی نگرنگم کے ٹیچروں نے الزام لگایاہے کہ وزیرآباد کے ایک پرائمری اسکول میں ہندواورمسلم بچوں کے الگ الگ سیکشن بنائے گئے ہیں۔
انڈین ایکسپریس کی ایک رپورٹ کے مطابق، وزیرآباد، گلی نمبر9میں نارتھ ایم سی ڈی بوائزاسکول کے اٹینڈینس ریکارڈ سے پتہ چلاہے کہ مذہب کی بنیادپرالگ الگ سیکشن بنائے گئے ہیں۔رپورٹ کے مطابق، کلاس 1اے میں 36ہندو، 1بی میں 36مسلم،کلاس 2اے میں 47ہندو، 2بی میں 26مسلم اور15ہندوہے۔وہیں 2سی میں 40مسلم طلبا ہیں۔
بتادیں کہ کلاس ایک اوردوکی طرح ہی دیگرکلاسوں میں بھی ہندواورمسلم کے تحت پرسیکشن کوتقسیم کیاگیاہے۔اسکول میں کچھ ہی سیکشن ایسے ہیں، جس میں ہندو اورمسلم طلبا ایک ساتھ پڑھائی کررہے ہو۔دراصل، ایم سی ڈی اسکول میں پانچویں تک پڑھائی کروائی جاتی ہے اورہرسیکشن میں 30بچے ہوتے ہیں۔حالانکہ اسکول کے انچارج سی بی سنگھ شیراوت نے مذہب کی بنیاد پرسیکشن تقسیم کرنے کی بات سے انکارکیاہے۔
Share Article

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *