معالجین کی ٹیم نے دل کادورہ پڑنے پر مریض کی جان بچانے کی تربیت دی

World-Heart-Restart-Day-obs
دل کا دورہ پڑنے پر اولین ایک گھنٹہ کو’’ گولڈن آور‘‘ ماناجاتا ہے اور اسی گولڈن آور میں ہم مریض کی جان بچا سکتے ہیں۔علی گڑھ مسلم یونیورسٹی (اے ایم یو)کے جواہر لعل نہرو میڈیکل کالج کے اینستھیسیولوجی اینڈ کرٹیکل کیئر شعبہ کے زیرِ اہتمام ورلڈ ری اسٹارٹ اے ہارٹ ڈے اینڈ ورلڈ اینستھیسیا ڈے پروگرام کے تحت اے ایم یو کے6سو سے زائد طلبہ و طالبات کو اینستھیسیولوجی شعبہ کے سربراہ پروفیسر ایس معید احمد کی قیادت میں اینستھیسیولوجی شعبہ کے معالجین کی ٹیم نے دل کا دورہ پڑنے کی صورت میں مریض کی جان بچانے کے لئے کئے جانے والے کمپریشن اونلی لائف سپورٹ (سی او ایل ایس) کے بارے میں تربیت دی۔ اس کے علاوہ ورکشاپ اور خطبہ کا بھی انعقاد کیا گیا۔
معالجین کی ٹیم نے ویمنس کالج، سینئر سیکنڈری اسکول گرلس، سید حامد سینئر سیکنڈری اسکول بوائز، اے ایم یو گرلس ہائی اسکول وایس ٹی ایس اسکول میں جاکر سی او ایل ایس تکنیک کے بارے میں بتایا اور تربیت دی۔انہیں بتایا گیا کہ جب کوئی سانس لینے میں معذور ہوجائے یا ہارٹ اٹیک آجائے تو سب سے پہلے بروقت سی او ایل ایس سے ہی آپ اس کی جان بچا سکتے ہیں۔ اسے’’ سنجیونی عمل‘‘ بھی کہتے ہیں اس موقع پر ویمنس کالج کی پرنسپل پروفیسر نعیمہ گلریز، سینئر سیکنڈری اسکول گرلس کی پرنسپل محترمہ نغمہ عرفان، سید حامد سینئر سیکنڈری اسکول کے پرنسپل سید محمد مصطفےٰ، اے ایم یو گرلس اسکول کی پرنسپل محترمہ آمنہ ملک و ایس ٹی ایس اسکول کے پرنسپل فیصل نفیس بھی موجود رہے۔
اختتامی تقریب کی مہمانِ خصوصی وائس چانسلر پروفیسر طارق منصور کی اہلیہ و ممتاز ماہرِ امراضِ اطفال ڈاکٹر حمیدہ طارق نے اس پروگرام کے انعقاد پر مسرت کا اظہار کرتے ہوئے کہا کہ اس قسم کی سرگرمیاں وقت کی اہم ترین ضرورت بن گئی ہیں اور یقینی طور پر اس سے دل کے دورے سے ہونے والی اموات میں پچاس فیصد کمی لانے میں مدد ملے گی۔
ورلڈ ری اسٹارٹ اے ہارٹ ڈے انٹر نیشنل لائزن آف کاؤنسل فار ریسسائٹیشن( آئی ایل سی او آر) اور انڈین سوسائٹی آف اینستھیسیولوجسٹس کے زیرِ اہتمام منایا جاتا ہے۔ پروفیسر ایس معید احمد نے بتایا کہ چونکہ ہارٹ اٹیک کے90فیصد واقعات گھر پر ہی ہوتے ہیں اس لئے انڈین سوسائٹی آف اینستھیسیولوجسٹس نے ہندوستان بھر میں ایک لاکھ افراد کو ’’گھر گھر میں جیون رکشک نعرہ‘‘ کے تحت تربیت دینے کا ہدف مقرر کیا ہے تاکہ ہر گھر میں ہارٹ اٹیک کی صورت میں مریض کو گھر پر ہی مدد مل سکے۔ڈاکٹر معید نے بتایا کہ انہوں نے ڈاکٹر راکیش گرگ کے ساتھ مل کر کمپریشن اونلی لائف سپورٹ رہنما ہدایات تیار کی ہیں جو کہ بہت ہی آسان اور یاد رکھنے میں سہل اور ہندوستان میں ایڈوانس سپورٹ سسٹم آنے تک ہندوستان کے کسی بھی حصہ میں مریض پر استعمال کی جا سکتی ہیں۔انہوں نے بتایا کہ ان رہنما ہدایات کو نومبر2014 میں اینستھیسیا کے جرنل میں شائع کیا گیا تھا اور نتیجتاً ہندوستان میں نافذ کیا گیا۔
اینستھیسیولوجی شعبہ کے پروفیسر حماد عثمانی نے جرنی آف اینستھیسیا اسپیشیالٹی فروم ایتھر ڈوم ٹو ورک اسٹیشن پر خطبہ پیش کیا۔اس کے علاوہ بیسک کارڈیوپلمونری لائف سپورٹ( بی سی ایل ایس) پر ریزیڈنٹس معالجین کے لئے ورکشاپ کاانعقاد کیا گیا جس میں سرجری، میڈیسن، آپتھلمولوجی، آرتھوپیڈک، پیڈیا ٹرکس اور گائناکولوجی شعبوں کے25ریزیڈنٹ معالجین نے حصہ لیا۔پروگرام کے انعقاد میں ڈاکٹر فرحہ نسرین و ڈاکٹر شہانہ علی، ڈاکٹر ابو ندیم، ڈاکٹر عبید صدیقی، ڈاکٹر کامران حبیب، ڈاکٹر حسین عامر، ڈاکٹر مناظر اطہر، ڈاکٹر معظم حسن نے اہم تعاون پیش کیا۔
Share Article

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *