سبریمالامندرپرفیصلے کے بعداب مسجدوں میں نماز پڑھنے کی اجازت کیلئے سپریم کورٹ جائیں گی مسلم خواتین 

muslim-women
سپریم کورٹ نے کیرالہ کی سبریمالا مندر میں ہرعمرکی خواتین کو داخلے کی اجازت دی تھی۔یعنی عدالت عظمیٰ نے خواتین کے حق میں فیصلہ سنایاتھا جس کے بعد اس فیصلے پرنظرثانی کیلئے عرضی داخل گئی ہے۔لیکن اب مندرمیں خواتین کے داخلہ کو لیکر سپریم کورٹ کے اس فیصلے کے بعد اب مسلم خواتین نے سنی مسجدوں میں داخلہ کا مطالبہ کیا ہے۔ کیرالہ میں واقع مسلم خواتین کی تنظیم اسے لیکر سپریم کورٹ جانے کی تیاری میں ہے۔ ان خواتین کا کہناہے کہ انہیں سنی مسجدوں میں جاکرنمازپڑھنے کا حق ملناچاہئے۔مسلم خواتین کی تنظیم نسا کا کہناہے کہ مسلم خواتین کوسنی مسجدوں میں داخلے کی اجازت نہیں ہے ۔اسی پروہ چاہتی ہیں انہیں بھی یہ حق ملے۔مسلم خواتین فارم این آئی ایس اے نے فیصلہ کیا ہے کہ سنی مسجد میں خواتین کے داخلے کو لیکر سپریم کورٹ جائے گا۔ نسا صدر وی پی زہرہ نے کہا ہے کہ ان کی تنظیم اگلے ہفتے سپریم کورٹ میں عرضی دائر کرے گی۔
زہرہ کا کہناہے کہ سنی مسجدوں میں خواتین کونمازپڑھنے کی اجازت نہیں دی جاتی۔ ساتھ ہی انہوں نے سبریمالامندرکے بارے میں بتاتے ہوئے کہاکہ ہندوخواتین کوان کے مندرمیں جانے کی اجازت مل گئی توانہیں سنی مسجدوں میں جانے سے کیوں روکاجارہاہے۔
زہرہ کاکہناہے کہ میں برابری کے حق کے تحت یہ کر رہی ہوں۔ سنی مسجدوں کے اندر خواتین کو نماز پڑھنے کی اجازت نہیں دی گئی جبکہ انہیں بھی حق ہے۔ پیغمبر محمد صلی اللہ علیہ وسلم کے وقت میں بھی خواتین مسجدوں میں نماز کے لئے جایا کرتی تھیں۔اس وقت کوئی روک نہیں لگی تھی تو یہ روک کیوں لگی ہے۔زہرہ کاکہناہے کہ انہو ں نے اس معاملے کے وکیلوں سے بات کرلی ہے اوراگلے ہفتے عدالت عظمیٰ جائیں گی۔
Share Article

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *