شہریوں کے حقوق پامال کرنے والوں کے خلاف موثر کارروائی کی ضرورت :مفتی مکرم

mufti-mukarram
شاہی امام مسجد فتحپوری دہلی مولانا ڈاکٹر مفتی محمد مکرم احمد نے آج نماز جمعہ سے قبل خطاب میں فرمایا کہ مذہب اسلام میں ا نسانی حقو ق کی حفاظت مکمل طور پر کی گئی ہے۔ پیغمبر اسلام ؐ محسن انسانیت ہیں اور ان کی تعلیمات دین اور دنیا دونوں کے لیے بہت اہم ہیں جن کو سمجھنے اور عمل کرنے کی اشد ضرورت ہے۔ مفتی مکرم نے کہا کہ گجرات میں شمالی ہند کے شہریوں کے ساتھ جو ظلم و زیادتی ہو رہی ہے اس پر مرکزی حکومت، وزارت داخلہ اور گجرات کی ریاستی حکومت کو موثر کارروائی کرنے کی ضرورت ہے۔ کیا ہندوستان کی تقسیم شمال اور جنوب سے کرنے والے کسی معافی کے مستحق ہیں۔ گجرات سے ہزاروں ہندی زبان والے شمالی ہند اتر پردیش بہار وغیرہ کے لوگوں کو نکال دیا گیا اس پر ایکشن لینے میں سستی نہیں ہونی چاہیے۔ پہلے بھی اس طرح کی تحریک دوسری ریاستوں میں بھی سر اٹھا چکی ہے اس کے لیے سخت قانون ہونا چاہیے اور ہندوستان کے ہر شہری کے حقوق کی حفاظت ہونی چاہیے جو گجرات سے نکالے گئے ہیں انہیں واپس بسانے کی ضرورت ہے۔
شاہی امام نے دہلی کے اسکولوں میں اردو زبان کے اساتذہ کی تقرری کے لیے وزیر تعلیم سے پرزور اپیل کی۔ انہوں نے کہا دہلی میں اردو کو دوسری سرکاری زبان ہونے کا درجہ سالوں پہلے دیا جاچکا ہے۔ جو طلبا اردو پڑھنا چاہیں ان کے لیے استادوں کا جلد بندوبست ہونا چاہیے۔ انہوں نے دہلی کے ایک اسکول میں ہندو مسلم ہونے کی بنیاد پر تفریق کیے جانے کی بھی شدید مذمت کی اور قصور واروں کے خلاف جلد کارروائی کا مطالبہ کیا۔ شاہی امام نے یو این او سے اپیل کی کہ انسانی حقوق کی حفاظت کے لیے وہ اپنا فرض ادا کرے۔ کچھ ممالک میں انسانی حقوق کی پامالی کی جارہی ہے اس سے یو این او کی زبردست بدنامی ہوتی ہے۔
Share Article

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *