تین طلاق معاملہ: مودی کابینہ کے بعد آرڈیننس پرصدرجمہوریہ کی بھی مہر

triple-talaq
ایک ساتھ تین طلاق (طلاق بدعت) اب جرم ہوگا اوراس کیلئے تین سال کی سزاہوگی۔تین طلاق کوجرم کے زمرے میں لانے کیلئے حکومت نے بدھ کوآرڈیننس کومنظوری دے دی ہے۔ وزیراعظم نریندرمودی کی صدارت میں بدھ کوہوئی مرکزی کابینہ کی میٹنگ میں اس آرڈیننس کی تجویزکومنظوری دی گئی۔دیرشب صدرجمہوریہ ہندرام ناتھ کووندنے آرڈیننس پردستخط کردےئے۔آرڈیننس پرصدرجمہوریہ کے دستخط ہوتے یہ قانون کی شکل لے لیا اوراس کے ساتھ ہی یہ قانون لاگوہوگیا۔
مرکزی وزیرقانون روی شنکر پرساد نے فیصلے کی جانکاری دیتے ہوئے بتایاکہ سپریم کورٹ کے حکم کے بعد بھی تین طلاق کے معاملے سامنے آرہے تھے، اس لئے آرڈیننس لانے کی ضرورت پڑی۔مرکزی سرکارکو6ماہ میں اس آرڈیننس کوبل کی شکل میں پارلیمنٹ میں پاس کرانا ہوگا۔
بدھ کوروی شنکرپرساد نے کابینہ کی میٹنگ کے بعد بتایاکہ تین طلاق پرگذشتہ سال کے سپریم کورٹ کے فیصلے کے بعد بھی مسلسل اس کے معاملے سامنے آرہے تھے۔مسلم خواتین کوانصاف دلانے کیلئے اوران کی صنفی مساوات برقراررکھنے کیلئے اس طرح کا قانون بے حد ضروری ہوگیاتھا۔اسلئے حکومت راجیہ سبھا میں بل پاس ہونے کا انتظار کئے بغیر اس پر آرڈیننس لے کرآئی ہے۔
Share Article

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *