کھانے کولیکربی ایچ یوکیمپس میں طلباکے درمیان جھڑپ

bhu
بنارس ہندویونیورسی(بی ایچ یو) کیمپس میں ایک بارپھرتنازعہ ہوگیاہے۔ اس بار یہ تنازع ہاسٹل میں کھانے کولیکرہواہے۔ بی ایچ یو کیمپس میں موجودایّر ہاسٹل کینٹین میں بڑلاہاسٹل کے کچھ لڑکے کھانا کھانے آئے تھے، جہاں ان کی دیگرطلبا سے بحث ہوگئی اورمعاملہ بڑھتا گیا۔کچھ طلبا نے الزام لگایاہے کہ جب دوتین طلبا ایر ہاسٹل پہنچے تو انہیں وہاں سے باہرنکال دیاگیا۔جس کے بعد بڑلا ہاسٹل سے کئی درجن طلبا وہاں پہنچے اورایّرہاسٹلوں کے طلبا پرحملہ بول دیا۔اس دوران طلبا نے قریب دودرجن گاڑیوں میں توڑپھوڑکی اورپتھراؤ کیا۔پولس کے مطابق، میس میں کھانے کولیکر دونوں ہاسٹلوں کے طلبا میں تنازعہ ہواہے۔زخمیوں کوٹراما اورایمرجنسی بھیجاگیاہے۔ایس اوبھارت بھوشن تیواری نے بتایاکہ برلا کے بی پی ایڈ، ڈی پی ایڈ کے طلباایرہاسٹل کینٹین کے میس میں کھاناکھاتے ہیں۔کھانا ائرہاسٹل کے بچوں کوروزکم پڑجاتاتھا۔جس کولیکردودن سے ایرہاسٹل کے طلبا ، برلا ہاسٹل کے طلباکی مخالفت کررہے تھے۔آج فزیکل ایجوکیشن کے طلبا نے پہلے ہنگامہ کیا ۔پھردونوں گروپ میں مارپیٹ ہوئی۔اس دوران کئی گاڑیوں اورگملوں کوتوڑاگیا ہے۔
تنازعہ کے بعد پولس نے توڑپھوڑ اورمارپیٹ کرنے والے 15طلباکی نشاندہی کی ہے۔انہیں گرفتارکرنے کیلئے پولس ہاسٹل پہنچی جس کے بعد پتھراؤ بھی کیاگیاہے۔ پولس آنسوگیس کے گولے بھی داغے ہیں۔بتایاجارہاہے کہ یہ معاملہ کافی طول پکڑتا گیا۔جس کے بعد مقامی پولس موقع پرپہنچی اورمعاملے کوکنٹرول کیا۔اس ہنگامے کے بعد ایرہاسٹل کے کئی طلبا دھرنے پربیٹھ گئے ۔ ان کا کہنا ہے کہ دوسرے ہاسٹلوں کے طلبا نے ان کے ہاسٹل پرحملہ کیاہے۔جس کی وہ مخالفت کررہے ہیں۔
Share Article

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *