سپریم کورٹ کا بڑا فیصلہ :سبریمالا مندر میں ہرعمرکی خواتین کو داخلہ کی ملی اجازت

sabrimala-temple
سپریم کورٹ نے آج کیرالہ کے سبریمالا مندر میں 10۔50 سال کی عمر کی خواتین کے داخلہ پر روک کو چیلنج دینے والی درخواستوں پر جمعہ کو اپنا فیصلہ سنا دیا۔ سپریم کورٹ نے تاریخی فیصلہ سناتے ہوئے کیرل کے سبریمالا مندر میں خواتین کوداخلے کی اجازت دے دی ہے۔ سپریم کورٹ نے صاف کہاکہ ہرعمرکی خواتین اب مندرمیں انٹری کرسکتی ہے۔کورٹ نے جمعہ کوفیصلہ سناتے ہوئے کہاکہ سبری مالا مندر میں ہرعمرکی خواتین جاسکتی ہیں۔جمعہ کو اپنے فیصلے میں سپریم کورٹ نے کہا کہ ہماری ثقافت میں خواتین کی حیثیت قابل احترام ہے۔ یہاں خواتین کو دیوی کی طرح پوجا جاتا ہے اور مندر میں داخل ہونے سے روکا جا رہا ہے۔
سپریم کورٹ کے اس فیصلے کے ساتھ 53سال پرانا قانون آج غیرآئینی ہوگیا۔پانچ ججوں کی بینچ میں چارججوں نے الگ الگ فیصلہ پڑھا لیکن سبھی کے فیصلے کا نتیجہ ایک ہی ہے، اسلئے اسے کثریت کا فیصلہ کہاجاسکتاہے۔جن چارججوں نے فیصلہ پڑھا ان میں چیف جسٹس دیپک مشرا، جسٹس چندرچورن ، جسٹس نریمن اورجسٹس اندوملہوترا شامل ہیں۔ چیف جسٹس نے فیصلہ سناتے ہوئے کہا کہ پوجا کرنے کا حق تمام عقیدت مندوں کو دیا جاتا ہے اور صنف کی بنیاد پر اس میں کوئی تفریق نہیں کی جاتی ہے۔چیف جسٹس دیپک مشرا نے فیصلہ کو پڑھتے ہوئے کہاکہ مذہب کے نام پر مردوں کی غلبہ والی سوچ صحیح نہیں ہے۔ عمر کی بنیاد پر مندر میں داخلے سے روکنا مذہب کا لازمی حصہ نہیں ہے۔سپریم کورٹ نے کہاکہ دفعہ26کے تحت داخلے پرپابندی صحیح نہیں ہے۔
فی الحال سبریمالا مندر میں 10 سے 50 سال کی عمر کی خواتین کو داخلہ کی اجازت نہیں دی جاتی تھی۔اب عدالت نے سبریمالا مندر میں خواتین کے داخلے کی اجازت دے دی ہے۔عدالت نے واضح طور پر کہہ دیا ہے کہ ہر عمر کی خواتین اب مندر میں داخل ہو سکیں گی۔
Share Article

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *