مرکزی جمعیت اہل حدیث کی جانب سے کیرل سیلاب زدگان میں راحتی اشیاء تقسیم

kelral flood
مرکزی جمعیت اہل حدیث ہند کا اعلیٰ سطحی راحتی وفد زیر قیادت مولانا اصغر علی امام مہدی سلفی امیر مرکزی جمعیت اہل حدیث ہند تیسری قسط کے ساتھ کیرالا کے دورہ پرہے۔ جس میں صوبائی جمعیت اہل حدیث کرناٹک وگوا جس نے سیلاب زدگان کے لیے ایک اچھی خاصی رقم جمع کی تھی ،کے ناظم محمداسلم خان اور خازن کے جے منصور قریشی عرف دادوبھائی وغیرہ اورگجرات کے احباب شامل ہیں۔ امیرمحترم مورخہ4؍ستمبر کی شب کیرالا پہنچے اور اگلے دن ان کی قیادت میں وفد نے کیرالا کے آلپ پورہ ایرناکلم، پری شور، اور کوٹ ایم اضلاع کے متعددسیلاب متاثرہ مقامات مثلاً پلا تھروتھی،چیمبوپورم،پونگا،نیڈوموڈی،منکمبو،چنگم،الوا، کنوک کارا،الکوکارا، پرایار وغیرہ کا دورہ کرکے وہاں کی صحیح صورت حال کا جائزہ لیا اور متاثرین کے مابین نقد ،چیک اورگھریلو اشیاء تقسیم کیں اوریہ سلسلہ ہنوز جاری ہے ۔اس اعلیٰ سطحی وفد کے ساتھ تمام دورے میں مرکزی جمعیت اہل حدیث ہندکی کیرالا یونٹ ندوۃ المجاہدین کے ذمہ داران واحباب نورمحمدشاہ خازن ندوۃ المجاہدین کیرالا، ایچ بابو سیٹھ نائب صدر ندوۃ المجاہدین کیرالا، مولانا زکریا صلاحی ناظم عمومی شبان المجاہدین،محمدماہن، انورنوچیما، عبدالناصرایلوکرا، محمدایم، محمداسماعیل، شیبو بابو، افضل ایپو، ارشادمانیچری وغیرہ شریک رہے۔
مرکزی جمعیت اہل حدیث ہند کے پیش نظر منظم طریقے سے متاثرین کی بازآبادکاری کاپروگرام ہے اس لیے صحیح صورت حال کے جائزہ کے بعد اس سلسلے میں جلدہی لائحہ عمل تیار کیاجائے گا ۔اسی طرح مرکزی جمعیت اہل حدیث ہند کی صوبائی اکائی کیرالاندوۃ المجاہدین نے بھی بڑے پیمانے پر ریلیف کاکام کیا ہے اوراس نے سیلاب متاثرین کی باز آبادکاری کا بڑا منصوبہ بنایاہے۔اس کا یہ کام بھی دیگرکاموں کی طرح ممتاز اورنمایاں ہے۔
مولانانے وفد کے ساتھ متعدد مقامات مثلاً منجھلی، اڈواشری، پاراوور، موپاتھدم، پورایار،وراپژا،ویلی یاتھوناڈووغیرہ کا دورہ کیا ،وہاں کے دلدوزمناظراورجانی ومالی تباہیوں کا مشاہدہ کیا اورمتاثرین کے مابین ریلیف تقسیم کی اور کہا کہ مرکزی جمعیت اہل حدیث ہند اوراس کی تمام اکائیاں مصیبت کی اس گھڑی میں اہل کیرالا کے ساتھ کھڑی ہے۔ساتھ ہی آپ نے عوام وخواص سے اپیل کی کہ کیرالا کے سیلاب متاثرین کی دل کھول کرمددکریں اوران کی بازآبادکاری کی مہم میں شریک ہوں۔ امیرمحترم نے مزید فرمایا کہ اللہ تعالیٰ اپنے بندوں کو مختلف طریقے سے آزماتا ہے تاکہ کون استقامت کے راستے پر گامزن رہتا ہے اور صبر کا دامن تھامے رہتاہے۔نیزیہ کہ وہ اپنے اعمال وکردار کا جائزہ لے کر اپنی ا صلاح کریں، ظلم وفساد سے دوررہیں اوراللہ کے قانون فطرت سے بغاوت نہ کریں۔یہ سیلاب بھی ایک بڑی آزمائش ہے۔ اس لیے ہم سب کواپنے پروردگارکی طرف رجوع ہونا چاہییاوراپنے مصیبت زدہ بھائیوں کی مددکرنی چاہیے۔
Share Article

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *