’’ بین الاقوامی یومِ خواندگی‘‘ کے موقع پراے ایم یو تقریب کا انعقاد

AMU-students-performing
’’ بین الاقوامی یومِ خواندگی‘‘ کے موقع پرعلی گڑھ مسلم یونیورسٹی (اے ایم یو) کے مرکز برائے تعلیمِ بالغان مسلسل تعلیم و توسیع کے زیرِ اہتمام پیلی کوٹھی میں واقع مرکز پر ایک تقریب کا انعقاد کیا گیا جس میں وائس چانسلر پروفیسر طارق منصور نے مرکز کی خدمات کو سراہتے ہوئے اسے اطراف کے علاقوں میں جاکر غیر تعلیم یافتہ افراد کو تعلیم کی طرف راغب کرنے کی تلقین کی۔ اس موقع پر مرکز کی طالبات کے ذریعہ تیار کردہ اشیا کو فروخت کرنے کے لئے ایک ’’ نمائش کم سیل‘‘ کا افتتاح وائس چانسلر پروفیسر طارق منصور نے مرکز کے ڈائرکٹر پروفیسر محمد گلریز، ویمنس کالج کی پرنسپل پروفیسر نعیمہ خاتون، مرکز کی ڈپٹی ڈائرکٹرڈاکٹر عائشہ منیرہ رشید اور ممتاز ماہرِ امراضِ اطفال ڈاکٹر حمیدہ طارق کی موجودگی میں کیا۔
پروگرام سے خطاب کرتے ہوئے وائس چانسلر پروفیسر طارق منصور نے کہا کہ مرکز برائے تعلیمِ بالغان اچھا کام کر رہا ہے اور اب اس کو اپنے دائرۂ کار میں توسیع کرتے ہوئے علی گڑھ اور اطراف کے ان علاقوں میں بھی تعلیم کی شمع روشن کرنی چاہئے جو تعلیمی پسماندگی میں نچلی پائیدان پر ہیں۔ انہوں نے اس مقصد کے لئے مرکز کو ایک لاکھ روپیہ کی رقم مہیا کرانے کا بھی اعلان کیا۔وائس چانسلر نے کہا کہ ریٹائرڈ اساتذہ کو بھی اس مرکز سے جوڑا جا سکتا ہے۔ انہوں نے کہا کہ ہمیں بنا تفریق سب کو تعلیم دینے کا ہدف طے کرنا چاہئے۔ انہوں نے کہا کہ حکومت بھی مختلف اسکیموں کے ذریعہ شرح خواندگی میں اضافہ کرنے کے لئے سنجیدگی کے ساتھ کوشاں ہے۔
ڈاکٹر حمیدہ طارق نے کہا کہ آئین میں ہر بچے کی تعلیم کو لازمی بنایا گیا ہے اور اب والدین کی ذمہ داری ہے کہ وہ اپنے بچوں کو اسکول ضرور بھیجیں۔ انہوں نے کہا کہ تعلیم کے ساتھ ہنر سیکھنا بھی فائدہ مند ہوتا ہے اس سے معاشرہ کو خوش حال بنانے میں مدد ملتی ہے۔تقریب کا آغاز مرکز کے ڈائرکٹر پروفیسر محمد گلریز کے استقبالیہ خطبہ سے ہوا۔ انہوں نے عالمی سطح پر خواندگی کی شرح میں کمی کے اعداد و شمار پیش کرتے ہوئے کہا کہ یونیسکو نے بھی مانا ہے کہ کم خواندگی کے سبب معاشرہ میں بہت سے مسائل پیدا ہوتے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ ملک کی پانچ بڑی اقلیتوں میں سے مسلمانوں کی شرح خواندگی تشویشناک حد تک کم ہے ، حالانکہ رسول ﷺ پر نازل ہونے والی پہلی وحی’’ اقراء‘‘ کے ذریعہ اللہ نے تعلیم حاصل کرنے کاواضح پیغام دیا تھا۔
اس موقع پر معروف موسیقار مسٹر جانی فاسٹر نے مرکز کی طالبات کے ساتھ اپنا گیت’’ آؤ مل کر علم کی شمع جلائیں پیش کیا جبکہ سوشل ورک شعبہ کے طلبہ و طالبات نے نکڑ ناٹک’’ ایک چٹھی‘‘ پیش کرکے تعلیم کی اہمیت کو واضح کیا اور مؤثر انداز میں یہ پیغام دیا کہ ہر بچہ کا تعلیم حاصل کرنا انتہائی ضروری ہے۔نظامت کے فرائض انجام دیتے ہوئے ڈاکٹر شمیم اختر نے سینٹر سے متعلق معلومات فراہم کیں جبکہ مشرف جہاں نے مختلف کورسیز کا تعارف کرایا۔ بیوٹیشین، کمپیوٹر، فنکشنل انگریزی، ڈریس ڈیزائن میں کامیاب طالبات کو وائس چانسلر پروفیسر طارق منصور اور ڈاکٹر حمیدہ طارق وغیرہ نے سرٹیفکیٹ سے نوازا۔ اس موقع پر ’’ پیڑ لگاؤ تحریک‘‘ کے تحت وائس چانسلر پروفیسر طارق منصور اور ڈاکٹر حمیدہ طارق نے پودے لگاکر ماحولیات پر توجہ دینے کی اہمیت کا پیغام دیا۔ پروگرام میں پرووسٹ عبداللہ ہال پروفیسر زیبا شیریں، پروفیسر قیصر جہاں، پروفیسر نسیم احمد، او پی شرما، ڈاکٹڑ عروس فاطمہ، ڈاکٹڑ بدر، قرۃ العین، مجاہدہ، پروفیسر سیمی، مشرف جہاں وغیرہ بھی موجود تھیں۔ ڈاکٹر عائشہ منیرہ نے حاضرین کا شکریہ ادا کیا۔
Share Article

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *