جامعہ وی سی سرچ کمیٹی کیلئے جسٹس ایم ایس اے صدیقی اورپروفیسر راماسوامی منتخب

MSA-Siddiqui
معروف ماہرقانون جسٹس ایم ایس اے صدیقی اورسائنسداں پروفیسر راما کرشنا راما سوامی کو اتفاق رائے سے سہ رکنی جامعہ ملیہ اسلامیہ کی وائس چانسلر(وی سی) سرچ کمیٹی کیلئے ارکان منتخب کیاگیاہے۔ ان دونوں شخصیات کے نام 31اگست کوہوئی ایگزیکٹیو کمیٹی (ای سی) کی خصوصی میٹنگ میں طے کیاگیاہے۔ سہ رکنی سرچ کمیٹی میں تیسرارکن صدرجمہوریہ ہند کا نامزد کیا ہوا(نامینی) ہوگا۔
پھریہ سہ رکنی سرچ کمیٹی وی سی کیلئے آئی درخواستوں میں سے 5افراد کے نام چنے گی اوریہ پانچوں نام صدرجمہوریہ کے پاس حتمی فیصلہ کیلئے جائیں گے۔ دریں اثناء وی سی کیلئے درخواست آنی شروع ہوگئی ہے۔اس کی آخری تاریخ 13ستمبر ہے۔ جامعہ کے آئندہ وی سی کیلئے جن افراد کے نام کی چرچاہے، ان میں جامعہ ہمدرد کے موجودہ وائس چانسلر اورمعروف سائنسداں پروفیسرسیداحتشام حسنین شامل ہیں۔
عیاں رہے کہ جسٹس ایم ایس اے صدیقی جوکہ جامعہ وی سی سرچ کمیٹی کیلئے منتخب کئے گئے ہیں، وہی ہیں جنہو ں نے بطورچےئرمین قومی کمیشن برائے اقلیتی تعلیمی ادارہ جات(این سی ایم ای آئیز) نے جامعہ کو2011میں اپنے تاریخی فیصلہ میں اقلیتی ادارہ قراردیاتھا مگر انہیں جامعہ نے گذشتہ 7برسوں میں کبھی اس کا علی الاعلان اعتراف نہیں کیا اورنہ کبھی انہیں جامعہ میں کسی خاص موقع سے مدعو کیا جبکہ اے ایم یو میں ان کی پذیرائی ہوتی رہی۔ان کے اس کارنامہ کاعدم اعتراف عمومی طورپرمحسوس کیاگیا۔گذشتہ برس سابق وی سی طلعت احمدسے جب ’چوتھی دنیا‘ اردو کے ہیڈ اے یوآصف نے ایک انٹرویوکے دوان اس سلسلے میں سوال کرنا چاہا توانہوں نے اس سوال کو آف دی ریکارڈ کرنے کی گذارش کی۔
سرچ کمیٹی میں دوسرے شخص جواہرلال نہرو یونیورسٹی ،نئی دہلی میں 1986سے اسکول آف فزیکل سائنسز میں پروفیسر ہیں اوروہیں اسکول فار کمپیوٹیشنل اینڈ انٹیگربٹیوسائنسزسے بھی وابستہ ہیں۔
Share Article

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *