گڑگاؤں:عوامی مقامات پرہو رہی نماز پر ہند تنظیم کو اعتراض، بھوک ہڑتال کی دھمکی

namaz
ہریانہ کے گڑگاؤں میں گزشتہ کچھ ماہ کی طرح ایک بار پھر ہندو تنظیم نے کھلے اور عوامی مقامات پر ہورہی جمعہ کی نماز پر اعتراض کرتے ہوئے بھوک ہڑتال کی دھمکی دی ہے ۔خبروں کے مطابق، عوامی مقامات پر نماز پڑھنے کا معاملہ آج پھر اٹھاتے ہوئے ہندو سوابھیمان تنظیم نے آئندہ پیر سے بھوک ہڑتال کی دھمکی دی ہے۔ تنظیم کے کنوینر وکرم سنگھ یادو اور وجے یادو نے پریس کانفرنس میں کہا کہ تنظیم کئی بار ضلع انتظامیہ سے درخواست کرچکی ہے کہ عوامی مقامات پر نماز ادا کرنے کی اجازت نہ دی جائے لیکن انتظامیہ نے اس جانب کوئی توجہ نہیں دی ہے۔انہوں نے کہا کہ ریاست کے وزیر اعلی منوہر لال کھٹر کے نوٹس میں بھی اس معاملے کو لایا گیا تھا۔تنظیم کے عہدیداروں نے کہا کہ اگلے ہفتے تنظیم کے کارکنان جمعہ کو اداکی جانے والی نماز کے مقامات کا ‘جائزہ’ لیں گے اور اگر عوامی اور کھلے مقامات پر نماز ادا کی گئی اور انتظامیہ نے کوئی کارروائی نہیں کی تو آئندہ پیر سے سیکرٹریٹ پر بھوک ہڑتال کی جائے گی۔
واضح رہے کہ رواں سال مئی میں گڑگاؤں میں متعدد مقامات پر ہو رہی نماز جمعہ کو بند کرانے کے لئے کچھ مقامی ہندو تنظیموں نے آواز اٹھائی۔اس کے بعد سے یہ معاملہ سیاسی رنگ لے لیا اور متعدد بی جے پی لیڈروں نے بھی اعتراض کرتے ہوئے اسے بند کرانے کی بات کہی۔جس کے رد عمل میں مقامی پولس انتظامیہ کی نگرانی میں کچھ عوامی مقامات پر جمعہ کی نماز باقاعدہ ہوتی رہی۔لیکن یہ معاملہ حل نہیں ہوا اور ہندو تنظیموں نے گڑگاؤں میں ہونے والے تمام عوامی مقامات پر نماز کی ادائیگی پر پابندی عائد کرنے کا مطالبہ شروع کر دیا ہے ۔
Share Article

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *