برخاست آئی پی ایس افسر سنجیو بھٹ کو حراست میں لیاگیا

sanjiv-bhatt
برخاست آئی پی ایس افسر سنجیوبھٹ کوآج 22سال پرانے ایک معاملے میں گجرات میں سی آئی ڈی نے حراست میں لے لیاہے۔ایک سینئرپولس افسرنے بتایاکہ یہ معاملہ 1996میں منشیات سے جڑے ایک کیس کاہے۔بہر کیف گجرات میں پولیس کی کرائم ریسرچ برانچ (سی آئی ڈی۔کرائم) نے برخاست آئی پی ایس افسر سنجیو بھٹ کو تقریبا دو دہائی پرانے ایک معاملہ میں آج گرفتار کر لیا۔ سی آئی ڈی۔کرائم پولیس ڈائرکٹر جنرل آشیش بھاٹیہ نے ’بتایا کہ سنجیوبھٹ اورسات دیگر کو،جس میں کچھ پولیس اہلکار بھی شامل ہیں، انہیں معاملے کی پوچھتاچھ کیلئے حراست میں لے لیاگیا ہے۔ سنجیوبھٹ سا ل 1996میں بناسکانٹھاضلع کے ایس پی تھے۔
خیال رہے کہ راجستھان کے پالی کے وکیل شمشیر سنگھ راج پروہت کو مئی 1996 میں گجرات کے بناسکانٹھا کی پولیس نے پالن پور کے ایک ہوٹل سے ایک کلو افیون کی برآمدگی کے معاملہ میں پکڑا تھا۔اس وقت بناسکانٹھاپولس نے دعویٰ کیاکہ پکڑا گیاڈرگ پالنپور میں راج پروہت کے ذریعے لئے گئے ہوٹل کے ایک کمرے میں ملاہے۔ حالانکہ، راجستھان پولس کی جانچ میں پتہ چلاتھاکہ راج پروہت پربناسکانٹھا پولس نے جھوٹا الزام لگایاتھا۔اس کے علاوہ یہ بھی سامنے آیاتھاکہ راج پروہت کا راجستھان کے پالی واقع اس کے گھرسے بناسکانٹھا پولس مبینہ طورپر اغوابھی کیاتھا۔
اس سال جون مہینے میں گجرات ہائی کورٹ نے راج پروہت کے ذریعہ دائر عرضی پرسنوائی کرتے ہوئے معاملے کوسی آئی ڈی کوسونپ دیاتھا۔ ہائی کورٹ نے سی آئی ڈی سے تین مہینے میں جانچ کوپوراکرنے کا حکم دیاتھا۔
Share Article

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *