بھارت بند:مودی سرکارکوبدلنے کا وقت جلدآئے گا:ڈاکٹرمنموہن سنگھ

bharat-band
پیٹرول-ڈیزل کی آسمان چھوتی قیمتوں کے خلاف کانگریس 21اپوزیشن پاٹیوں نے آج ’بھارت بند‘ کا اعلان کیاہے۔بندکے دوران ملک بھرسے الگ الگ تصویریں سامنے آرہی ہیں۔ بہارمیں مظاہرین نے تھوڑپھوڑکی ہے۔ کئی جگہ آگ زنی بھی ہوئی ہے۔پٹرول، ڈیزل اور رسوئی گیس کی بڑھتی ہوئی قیمتوں کے خلاف کانگریس نے آج بندبھار بندبلایاہے۔کانگریس نے ایس پی، بی ایس پی، ،ڈی ایم کے سمیت 21پارٹیوں کی حمایت کا دعویٰ کیاہے۔ بایاں بازو بھی بندکے ساتھ ہیں۔ صبح 9بجے سے دوپہر3بجے تک بندکی اپیل کی ہے۔
بھارت بندکے چلتے تلنگانہ، اڑیسہ، بہار ،مہاراشٹرسمیت ملک بھراس کا ملا جلا اثردیکھاجارہاہے۔ ممبئی میں جہاں ایم این ایس کارکنوں نے زبردستی دکانیں بندکروائی ،تووہیں دوسری طرف پٹنہ میں اپوزیشن پارٹیوں کے کارکنان کی طرف سے توڑپھوڑ کی گئی اورکئی جگہ پرٹرنیں روکی گئی۔
ادھردہلی میں دھرنے میں سونیاگاندھی کے ساتھ شامل ہوئے سابق وزیراعظم ڈاکٹرمنموہن سنگھ نے کہاکہ مرکزی سرکارنے کئی ایسے اقدامات کئے ہیں جوقومی مفادمیں نہیں ہے۔ ایسے میں سرکار کوبندلنے کا جلدہی وقت آئے گا۔
اس سے قبل بھارت بند میں شامل پارٹیوں کے لیڈروں نے گاندھی کی سمادھی پر گلہائے عقیدت پیش کئے۔باپو کی سمادھی پر گلہائے عقیدت پیش کرنے والے لیڈروں میں۔ مسٹر راہل گاندھی کے علاوہ کانگریس کے سینئر لیڈر غلام نبی آزاد، اشوک گہلوت، احمد پٹیل، آنند شرما اور رندیپ سرجیوالا شامل تھے۔پارٹی صدر راہل گاندھی کے ساتھ ہی بند میں شامل الگ الگ پارٹیوں کے ممبران پارلیمنٹ نے آج راج گھاٹ جا کر گاندھی جی کی سمادھی پر گلہائے عقیدت پیش کئے۔نیشنلسٹ کانگریس کے طارق انور، راشٹریہ جنتا دل کے جے پرکاش نارائن یادو، آر ایس ڈی کے این کے پریم چندرن سمیت کئی لیڈرز راہل کے ساتھ راج گھاٹ جا کر گاندھی جی کو یاد کیا۔
پٹرول، ڈیزل اور رسوئی گیس کی بڑھتی ہوئی قیمتوں کے خلاف کانگریس کے اعلان پر اپوزیشن پارٹیوں کے بھارت بند کے دوران کئی مقامات پر بند حامیوں نے توڑ پھوڑ کی۔بھارت بند میں دہلی ،بہار، اوڈیشہ، کرناٹک، مغربی بنگال، گوا، مدھیہ پردیش، مہاراشٹرا، تمل ناڈو، ہریانہ، کیرالہ اور تلنگانہ ودیگرریاستیں شامل ہیں۔کرناٹک سمیت کچھ ریاستوں میں اسکولوں، کالجوں اوردفتروں میں چھٹی کردی گئی ہے۔ دوادکانوں، اسپتال اورایمبولینس کوبندسے باہر رکھا گیاہے۔
Share Article

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *