’بھارت بند‘ کے دوران پپو یادو پرحملہ

pappu-yadav
مرکزی حکومت کے ذریعے ایس سی اورایس ٹی قانون کولیکر لائے گئے آرڈیننس کے خلاف مبینہ طورپر اپرکاسٹ کی طرف سے بلائے’ بھارت بند‘کوملک بھرمیں اثر دیکھنے کومل رہاہے۔آج بھارت بندکے دوران مدھے پورہ سے مبرپارلیمنٹ راجیش رنجن عرف پپو یادو کی کار پر حملہ ہوا۔بہارکے مظفرپور ضلع میں پپویادو اوران کے باڈی گارڈ پرقریب 15مجرموں نے حملہ جان لیوا حملہ کردیا۔ پپویادو کے باڈی گارڈ نے انہیں کسی طرح بچا کرمحفوظ جگہ پہنچایا۔ وہ ’پدیاترا‘ میں شامل ہونے کیلئے مدبھوبنی جارہے تھے۔اسی دوران صدرتھانہ علاقے کے کھبرا علاقے میں بدمعاشوں نے ان پرحملہ کردیا۔
حملے کی جانکا ری پپودیادو نے بھی دی اورکہا کہ انہیں بری طرح زخمی کردیاگیاہے۔ اس حادثے کے بعد پپویادو نے ٹویٹ کیا کہ ’’مہاجنگل راج کا ننگاناچ ’ناری بچاؤ‘ پدیاترا میں مدھوبنی جانے کے دوران ہمارے قافلے پر’بھارت بند‘ کے نام پرغنڈوں نے حملہ کیا، کارکنان کوبری طرح ذاتی پوچھ پوچھ کرپیٹاہے۔ آخربہارمیں کوئی حکومت -انتظامیہ ہے ،یا نہیں! سی ایم نتیش کمار آپ کس ’’کمبھ کرنی‘ نیندمیں سوئے ہیں‘‘۔
پپو یادو نے اس دوران نامہ نگاروں سے کہا کہ اگرمیرا گارڈ نہیں ہوتا تو میں نہیں بچتا۔ ان لوگوں نے مجھے فحش گالیاں دیں۔ پیچھے سے مجھ پر حملہ کیا گیا۔ نامہ گاروں سے بات کرتے ہوئے جذباتی بھی ہوگئے۔ حملے کے بعد پپویادو پھوٹ پھوٹ کررونے لگے۔ یادونے کہاکہ بدمعاش بار بار ان کی ذات پوچھ رہے تھے ۔ میں اپنی گاڑی میں بیٹھ کرپدیاتراکیلئے جارہاتھا۔ انہو ں نے کہاکہ ہم سب کی لڑائی سرکار سے ہے۔انہوں نے کہا کہ میں نے ایس پی، آئی جی کو فون ملایا، لیکن کسی نے نہیں اٹھایا۔ انہوں نے کہا کہ وزیراعلیٰ نتیش کمار کو فون کیا تو ان کے پی اے نے فون اٹھایا۔پپویادو نے روتے ہوئے کہاکہ اگرمیرے پاس باڈی نہیں ہوتے تووہ لوگ جان سے ماردیتے۔
مدھیہ پردیش میں ایس سی اورایس ٹی ایکٹ کے خلاف اعلیٰ ذات کے لوگوں کا بھارت بندکا اثردیکھنے کومل رہاہے۔مظاہرین نے کئی مقامات پرجم کرہنگامہ آرائی بھی کی ہے۔ اس کا اثر مدھیہ پردیش، راجستھان، مہاراشٹر اور بہار وغیرہ میں زبردست طریقے سے دیکھنے کو ملا ہے۔ بہارمیں پولیس اورمظاہرین کے درمیان جھڑ پ بھی ہوئی ہے۔ اس کے علاوہ بی جے پی دفاتر کے باہربھی احتجاج کیا گیا ہے۔
Share Article

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *