زبردستی کٹوادی مسلم نوجوان کی داڑھی،دوملزم سمیت نائی گرفتار

zafruddin
ہریانہ کے گڑگاؤں(گروگرام) میں گذشتہ زبردستی ایک مسلم نوجوان کی داڑھی کاٹنے اوراسے پاکستانی کہہ کرمارپیٹ کامعاملہ سامنے آیاتھا۔گڑگاؤں کے کھانڈسا منڈی علاقے میں کچھ بھگوا ہندولڑکوں نے مبینہ طورپر ظفرالدین نامی مسلم نوجوان کوسیلون لے گئے ، پھراسے مارا اورپاکستانی کہہ زبردستی داڑھی کٹوادی۔
معاملے کے طول پکڑنے کے بعد پولس نے کیس درج کیا، جس کے بعدپولس نے اس معاملے میں تین ملزموں کوگرفتارکرلیاہے۔پولس کے مطابق، یہ معاملہ 31جولائی کا ہے، سیلون والے سمیت تین لوگوں کی گرفتارہوچکی ہے۔پولس کا دعویٰ ہے کہ اس معاملے میں کسی کا بھی کسی بھی تنظیم سے کوئی تعلق نہیں ہے۔
حالانکہ پولس نے اس معاملہ کو الگ ہی رنگ دینے کی کوشش کی ہے اور اس مسلم نائی نوجوان کو بھی گرفتار کر لیا ہے جسے دونوں ملزمان نے دھمکی دے کر زبردستی داڑھی مونڈنے کے لئے مجبور کیا تھا۔پولس کا کہنا ہے کہ ظفر اور دونوں ملزمان میں بال کٹوانے کو لے کر تنازعہ ہوا جس کے بعد دونوں ملزمان اور اخلاق نامی نائی نے مل کر اس کی داڑھی مونڈ دی۔ فی الحال پولس دونوں ملزمان کی شناخت ظاہر نہیں کر رہی ہے۔ گروگرام کے ڈی سی پی کرائم نے اتنا ضرور کہا کہ دونوں ملزمان جھگڑالو قسم کے ہیں اور ان کا مجرمانہ ریکارڈ پہلے سے ہی موجود ہیں۔
بہرکیف ظفرالدین کی داڑھی زبردستی کٹوانے کی خبر پھیلتے ہی مسلم طبقہ میں غم وغصہ کا عالم ہے۔ اس تعلق سے معزز افراد کا ایک وفد کمشنر کے پاس پہنچا تھا اور شکایت پیش کی۔ جس کے بعد پولس نے ایف آئی آر درج کر لی تھی۔
Share Article

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *