انٹرنیٹ پرتصویریں آنے کے بعدخاتون نے درج کرایا اجتماعی عصمت دری کا معاملہ

rape
آندھرادیش کے گنٹور ضلع میں چار لوگوں کے ذریعے ایک خاتون کے ساتھ مبینہ طور پر اجتماعی عصمت دری کامعاملہ سامنے آیاہے۔ متاثرہ خاتون نے دعویٰ کیا ہے کہ اس کی آبروریزی مارچ میں کی گئی لیکن اس وقت اس نے پولیس میں اس کی شکایت درج نہیں کروائی تھی، لیکن اب تصاویر وائرل ہو جانے کے بعد خاتون نے معاملہ پولیس میں درج کروایا ہے۔
پولیس ڈپٹی کمشنر(مغربی زون)اے آرسری نواس نے بتایا کہ ایس آر نگر کی رہنے والی 28 سالہ خاتون نے پولس میں شکایت دی کہ اس کے ساتھ یہ حادثہ مارچ میں ہوا۔ تب اس نے اس کی شکایت درج نہیں کروائی تھی لیکن کچھ روز قبل ہی تصاویر انٹرنیٹ پر دیکھی گئیں جس کے بعد پولیس میں متاثرہ نے معاملہ درج کرایا۔
پولیس افسر کے مطابق خاتون نے کہا کہ ملزمین میں سے ایک شخص اس کا جاننے والا تھا۔ ملزم نوکری کے بہانے گنتور میں اسے ایک کمرے میں لے گیا اور اسے نشیلی اشیا پلائی اس کے بعد خاتون بے ہوش ہو گئی اور جب اسے ہوش آیا تو متاثرہ کو معلوم ہوا کہ اس کے ساتھ عصمت دری ہوئی ہے۔ پولیس افسرنے بتایاکہ اس سے متعلق معاملہ درج کرلیاگیاہے۔انہو ں نے کہا کہ مذکورہ معاملہ گنٹور پولیس کو بھیجا جائے گا کیوں کہ یہ معاملہ گنٹور میں ہی پیش آیا ہے۔بہرکیف پولس معاملے کی جانچ میں لگ گئی ہے۔
Share Article

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *