واجپئی کی حالت اب بھی نازک،پورے ملک کی نگاہیں ایمس پرمرکوز،لیڈروں کا ہجوم

atal-ji
دہلی میں واقع آل انڈیاانسٹی ٹیوٹ آف میڈیکل سائنس(ایمس)میں سابق وزیر اعظم اٹل بہاری واجپئی گذشتہ قریب 9ہفتے سے داخل ہیں۔ایمس نے کل رات میڈیکل بلیٹن میں کہا تھاکہ گزشتہ 24 گھنٹوں کے دوران ان کی حالت مزید بگڑگئی ہے ۔ان کی حالت بہت سنگین ہے اور انہیں لائف سپورٹنگ سسٹم پر رکھا گیا ہے۔آج ایمس کے تازہ بلیٹن کے مطابق، واجپئی جی کی حالت میں کوئی سدھارنہیں ہے۔ ایمس کی میڈیا اور پروٹوکول ڈویڑن کی سربراہ پروفیسر آرتی وج نے تقریباً 11 بجے دو لائنوں کا بلیٹن جاری کیا جس میں کہا گیا کہ مسٹر واجپئی کی صحت جوں کی توں ہے۔ان کی حالت نازک ہے اور وہ لائف سپورٹنگ سسٹم پر ہیں۔
اس درمیان آل انڈیا انسٹی ٹیوٹ آف میڈیکل سائنسز (ایمس) میں قدآور لیڈروں کا گذشتہ روزسے ہی مسٹر واجپئی کو دیکھنے آنے کا سلسلہ بھی جاری ہے۔ایمس میں بی جے پی لیڈران سمیت اپوزیشن پارٹیوں کے لیڈران کی بھیڑلگی ہوئی ہے۔
اٹل جی ایمس میں زیرعلاج ہیں اوران کی حالت نازک ہونے کی وجہ سے آج پورے ملک کی نگاہیں ایمس پر لگی ہوئیں ہیں۔ نائب صدر ایم ونکیانائڈو مسٹر واجپئی کو دیکھنے آج صبح اسپتال پہنچے وہیں مرکزی وزیر صحت جے پی نڈا، مرکزی وزیر مختار عباس نقوی، رام ولاس پاسوان، گری راج سنگھ ،ہریانہ کے گورنر کپتان سنگھ سولنکی، بھارتیہ جنتا پارٹی صدر امت شاہ، سابق نائب وزیر اعظم لال کرشن اڈوانی اور سابق مرکزی وزیر مرلی منوہر جوشی ان کی خیریت جاننے کے لئے آج صبح ایمس پہنچے۔وہیں کانگریس صدرراہل گاندھی، سابق وزیراعظم ڈاکٹرمنموہن سنگھ، راجیوشکلا،دہلی کے سی ایم اروندکجریوال، منیش سسودیا بھی ایمس پہنچے ہیں۔جموں وکشمیرکے سابق وزیراعلیٰ فاروق عبداللہ بھی اٹل جی کی عیادت کیلئے ایمس پہنچے اورانہو ں نے کہاکہ اس وقت تمام لوگوں کواٹل جی کی صحت یابی کیلئے دعاکرناچاہئے۔

ادھر مرکزی وزیر راج ناتھ سنگھ نے بھی ایمس جاکر مسٹر واجپئی کی صحت کے بارے میں معلومات لی۔ بہت سے دوسرے لیڈر بھی سابق وزیر اعظم کا حال چال جاننے اسپتال پہنچ رہے ہیں وہیں وزیر اعظم نریندر مودی مسٹر واجپئی کی صحت کو لے کر مسلسل نظر رکھے ہوئے ہیں۔ مسٹر مودی کل دیر شام مسٹر واجپئی کی خیر خیریت لینے ایمس پہنچے تھے اور ان کا علاج کر رہے ڈاکٹروں سے بات چیت کی تھی۔اٹل جی کی حالت مزیدخراب ہونے کی وجہ سے پی ایم مودی آج بھی ایمس پہنچے رہے ہیں۔بڑی تعداد میں مرکزی وزراء، سیاسی پارٹیوں کے رہنماؤں اور ان کے مداحوں کے آنے کی وجہ سے یہاں سیکورٹی انتظامات سخت کر دیا گیا۔
جوائنٹ پولیس کمشنر (جنوب) دیویش شریواستو کی قیادت میں بڑی تعداد میں پولیس اہلکاروں کو ایمس کے ارد گرد تعینات کیا گیا ہے۔ ایمس کے باہر اور اس کے اندر سینئر افسر موجود ہیں اور ٹریفک کو کنٹرول میں رکھنے پر خصوصی توجہ دی جا رہی ہے۔
Share Article

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *