مظفر پور عصمت دری معاملہ : سواتی مالیوال کا نتیش کمار کو خط 

swati-maliwal
بہارکے مظفرپورشیلٹرہوم میں بچیوں کے ساتھ عصمت دری معاملے پر دہلی خواتین کمیشن کی صدر سواتی مالیوال نے ریاست کے وزیر اعلی نتیش کمار کو خط لکھا ہے۔خط کے ذریعے سے سواتی مالیوال نے عصمت دری معاملے کولیکر نتیش کمارسے کئی سوال کئے ہیں اورقصورواروں کے خلاف سخت کارروائی کئے جانے کی مانگ ہے۔دوپیج کے لکھے اس خط میں مالیوال نے نتیش کمارسے پوچھاہے کہ ’سر،آپ کی کوئی بیٹی نہیں ہے لیکن میں آپ سے پوچھنا چاہتی ہوں کہ اگران 34لڑکیوں میں سے ایک بھی آپ کی بیٹی ہوتی ،توبھی آپ کسی کے خلاف کوئی ایکشن نہیں لیتے؟آپ کے اس ایک عمل سے آپ نے اس ملک کی کروڑوں خواتین اوربچیوں میں اپنی عزت کھوئی ہے‘‘
دہلی خواتین کمیشن کی صدر سواتی مالیوال کا خط اس طرح ہے۔’’نتیش کمار جی، آج پھر میں رات میں ٹھیک طرح سو نہیں پائی۔ مظفر پور کے گرلز شیلٹر ہوم کی بیٹیوں کی چیخیں مجھے گزشتہ کئی دنوں سے سونے نہیں دیتی، ان کے درد کے سامنے ملک کا سر شرم سے جھک گیا ہے۔ میں چاہ کر بھی اس درد کو اپنے آپ سے الگ نہیں کر پارہی ہوں،اسلئے میں آپ کو یہ خط لکھ رہی ہوں۔میں جانتی ہوں کہ بہار میرے دائرہ اختیار میں میں نہیں آتا، لیکن ملک کی ایک خاتون ہونے کے ناطے میں یہ خط لکھ رہی ہوں۔ امید ہے آپ میرا یہ خط ضرور پڑھیں گے۔یہ لڑکیاں محض سات سے 14 سال کی عمر تھیں اور زیادہ تر یتیم تھیں۔
انہوں نے خط میں لکھا ہے ’’کس طرح ‘ رضا کار تنظیم کا مالک برجیش ٹھاکر نام کا حیوان اور کئی افسر اور لیڈر روز رات میں ان کے ساتھ زیادتی کرتے تھے۔برجیش ٹھاکر کو وہ ’ہنٹروالا انکل‘ کہتی تھی جو ہر رات لڑکیوں کو اپنی ہوس کا شکار بناتا تھا۔ چھوٹی سی 10 سال کی ایک معصوم نے بتایا ہے کہ کس طرح اس کومنشیات دیکر روز رات میں برجیش ٹھاکر اس کے ساتھ ریپ کرتا تھا.لڑکیاں رات ہوتے ہی کانپنے لگ جاتی تھی کیونکہ انہیں پتہ تھا کہ ان کے ساتھ رات میں ظلم و ستم کے پہاڑ توڑے جائیں گے۔
اس شیلٹرہوم کی یہ خوفناک صورتحال ا پریل 2018میں ٹی آئی ایس ایس کی ایک رپورٹ میں اجاگرہوئی۔لیکن سرمجھے بہت دکھ ہوتاہے کہ آپ کی سرکار نے تومہینوں تک اس رپورٹ میں کوئی ایکشن نہیں، بلکہ برجیش ٹھاکرنام کے حیوان کے این جی اوکواورپروجیکٹ دےئے۔جب میڈیاکے ذریعہ پورے واقعہ سامنے آیا، تب بھی آپ کوئی بڑافیصلہ لیتے ہوئے نظرنہیں آئے۔بس جب آپنے بہت دباؤ محسوس کیاتو معاملہ سی بی آئی کوسونپ کراپنا پیچھاچھڑالیا۔آپ کی سرکارکے ایک منتری اورسنتری پراب تک کوئی ایکش نہیں ہوا ہے۔
اس کا نتیجہ ہے جب برجیش ٹھاکرمیڈیا کے دباؤ میں کئی دن بعد گرفتارہواتواس کے چہرے پرایک مسکراہٹ تھی۔ وہ ایک بڑابلڈرہے اوراس کے چہرے کی ہنسی اس کی سیاسی رسوخ کوپوری طرح سے اجاگرکرتاہے۔شایداسے پتہ ہے کہ یہ کھوکھلاسسٹم اس کا کچھ نہیں بگاڑ پائے گا۔
Share Article

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *