اے ایم یو کے ڈاکٹروں نے سات ماہ کی بچی کے دل کی پیچیدہ سرجری کرکے اس کی زندگی بچائی

Seven-month-old-baby
علی گڑھ مسلم یونیورسٹی (اے ایم یو) کے جواہر لعل نہرو میڈیکل کالج و اسپتال کے ڈسٹرکٹ اَرلی انٹرونشن سنٹر (ڈی ای آئی سی) میں ڈاکٹروں نے سات ماہ کی ایک بچی کے دل میں پیدائش سے ہی موجود نہایت سنگین نقص اور بیماری کوسرجری کرکے ٹھیک کیا۔ یہ کامیاب آپریشن چار گھنٹے تک چلا۔
علی گڑھ ضلع کے جواں گاؤں کے سلمان نامی شخص کی بچی ماہرہ کو کچھ کھلانے پلانے پر اس کا رنگ نیلا پڑ جاتا تھا ۔ ماہرہ کے والدین نے اسے کئی ڈاکٹروں کو دکھایا مگر کوئی راحت نہیں ملی۔ علی گڑھ ضلع اسپتال میں دکھائے جانے پر وہاں سے جواہر لعل نہرو میڈیکل کالج میں واقع ڈسٹرکٹ اَرلی انٹرونشن سنٹر کے لئے ریفر کیا گیا۔ یہاں بچی کو سب سے پہلے ڈاکٹر شاد عبقری اور ڈاکٹر کامران (بچوں کے دل کے امراض کے ماہر) نے دیکھا۔ جانچ میں پتہ چلا کہ بچی کے دل میں پیدائش سے ہی نقص ہے۔ اس کے دل کے تین حصوں میں سے ایک حصہ کی نشو و نما نہیں ہوئی تھی اور دل میں بڑا سوراخ بھی تھا جس کی وجہ سے خالص اور ناقص خون آپس میں مل رہا تھا۔
بیماری کے علاج کے لئے اینجیوگرافی کی گئی ، جس کے بعد بچی کی زندگی بچانے کے لئے سرجری کرنے کا فیصلہ کیا گیا۔ کارڈیوتھوریسک سرجن پروفیسر ایم ایچ بیگ، ڈاکٹر محمد اعظم حسین اور ڈاکٹر غضنفر خاں کی ٹیم نے یہ کامیاب آپریشن کیا۔ انستیھسیا ڈاکٹر شمیم گوہر اور ان کی ٹیم نے دیا۔ سرجری کے دوران نمی قائم رکھنے کا کام مسٹر صابر علی خاں اور انور رضوی نے کیا۔ چار گھنٹے تک چلنے والے اس آپریشن میں بچی کے سر، گردن اور ہاتھوں کے خون کو براہ راست پھیپھڑے کی طرف بھیجا گیا۔ آپریشن کے بعد بچی کو پیڈیاٹرک کارڈیک آئی سی یو میں رکھا گیا جہاں ڈاکٹر شہزاد اور ان کی ٹیم نے اس کی دیکھ بھال کی۔
ٍ اے ایم یو کے وائس چانسلراور کارڈیوتھوریسک سرجری شعبہ کے سربراہ پروفیسر ایم ایچ بیگ نے بتایا کہ شمالی ہند میں بہت کم طبی مراکز پر بچوں کے دل کا آپریشن کیا جاتا ہے۔ انھوں نے بتایا کہ بچی کا آپریشن قومی اطفال صحت پروگرام (آر بی ایس کے) کے تحت مفت میں کیا گیا۔ یہ پروگرام قومی صحت مشن نے جواہر لعل نہرو میڈیکل کالج کو دیا ہے۔ کارڈیوتھوریسک سرجری کے ایسوسی ایٹ پروفیسر ڈاکٹر محمد اعظم حسین نے بتایا کہ جواہر لعل نہرو میڈیکل کالج (جے این ایم سی) پورے مغربی اترپردیش کا واحد حکومتی طبی مرکز ہے جہاں بچوں کے دل کی پیچیدہ سرجری کرنے کے وسائل دستیاب ہیں۔یہاں ابھی کئی بچے انتظاری فہرست میں ہیں جن کے دل کا آپریشن ہونا ہے۔
ڈی ای آئی سی کی نوڈل آفیسر ڈاکٹر عظمیٰ فردوس نے بتایا کہ اس سرکاری پروگرام سے 80سے زائد بچوں کو فائدہ ہوا ہے اور ان کے دل کا مفت آپریشن کیا گیا ہے۔ ’آر بی ایس کے‘ کے نوڈل آفیسر ڈاکٹر شاد عبقری نے بتایا کہ جے این ایم سی میں 10کلو سے کم وزن والے بچوں کا مسلسل علاج کیا جاتا ہے اور سرجری کے لئے مشرقی اور وسطی اترپردیش سے بھی بچے جے این ایم سی آرہے ہیں۔ میڈیکل کالج کے پرنسپل ، ڈین اور سی ایم ایس پروفیسر ایس سی شرما نے ڈاکٹروں کواس کامیاب سرجری پر مبارکباد پیش کرتے ہوئے کہاکہ یہ جے این ایم سی کے لئے فخر اور اعزاز کا موقع ہے جہاں پیچیدہ آپریشن کئے جارہے ہیں اور بچوں اور ان کے سرپرستوں کو راحت پہونچائی جارہی ہے۔
Share Article

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *