این آرسی معاملے میں سپریم کورٹ نے این آرسی کوآرڈینیٹرکوپھٹکارلگائی

supreme_court
این آرسی(نیشن رجسٹرآف سٹیزن پرجاری سیاسی گھمسان کے بیچ آج سپریم کورٹ نے آسام این آرسی کے کوآرڈینیٹر پرتیک ہزیلا اوررجسٹرجنرل آف انڈیاکومیڈیامیں بیان دینے پرپھٹکارلگائی ہے۔سپریم کورٹ نے دونو ں کوتوہین عدالت کا مجرم ماناہے۔ میڈیا میں آئے پرتیک ہزیلاکے بیان پرسپریم کورٹ نے کہاکہ آپ کون ہوتے ہیں یہ کہنے والے کہ فریش ڈاکیومنٹ دیں۔آپ نے یہ کیسے کہاکہ کافی موقع دیں گے۔سپریم کورٹ نے کہاکہ آپ کاکام رجسٹرتیارکرناہے نہ کہ میڈیاکوبریف کرنا۔دراصل ہزیلاکے اخبارمیں آئے انٹرویوکولیکر سپریم کورٹ نے ناراضگی کا اظہارکیاہے۔
سپریم کورٹ نے ناراضگی کا اظہارکرتے ہوئے این آرسی کے کوآرڈینیٹرکوکہاکہ آپ کیسے کہہ رہے ہیں کہ رجسٹرمیں نام درج کروانے کیلئے فریش ڈاکیومنٹ دینے ہو ں گے۔سپریم کورٹ نے ہزیلا سے پوچھاکہ آپ کوکورٹ کی توہین کرنے میں کیوں نہ جیل بھیجاجائے؟ سپریم کورٹ نے ہزیلا اوررجسٹرارجنرل کوکہاکہ مستقبل میں ہوشیاررہیں اورکورٹ کے حکم کے مطابق کام کریں۔
سپریم کورٹ نے ہزیلاکوکہاکہ آپ کا کام صرف این آرسی بنانا تھا نہ کہ پریس میں جانا۔سپریم کورٹ نے کہاکہ ہزیلاکے اسٹیٹ منٹ کولیکرسنوائی شروع ہوئی ہے۔کورٹ نے کہاکہ جواسٹیٹ منٹ ہزیلا نے دیاہے وہ صحیح نہیں ہے۔
سپریم کورٹ نے ہزیلااوررجسٹرارجنرل کوکہاکہ مستقبل میں محتاط رہیں اورکورٹ کے حکم کے مطابق کام کریں۔این آرسی فائنل کولیکرکام کرے۔سپریم کورٹ نے ہزیلا اوررجسٹرارجنرل کوکہاکہ ہم آپ کوجیل بھیج سکتے تھے، لیکن ہم نے خودکوروکاہے۔ہزیلانے معافی مانگی اورکہاکہ آرجی آرکی صلاح کے بعدوہ میڈیاکے پاس گئے تھے۔
Share Article

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *