مانسون سیشن میں ہی ایس سی -ایس ٹی سے منسلک بل پاس کراناچاہتے ہیں وزیرداخلہ راجناتھ سنگھ

rajnath-singh
پارلیمنٹ کا مانسون سیشن چل رہاہے۔ایک طرف توآسام نیشنل رجسٹرآف سٹیزن( این آرسی) کامعاملہ گرمایاہواہے، وہیں دوسری طرف مودی سرکار ایک اوراہم ترمیمی بل پیش کرنے جارہی ہے۔لوک سبھا میں اپوزیشن کے لیڈر ملک ارجن کھڑگے نے ایس سی /ایس ٹی ایکٹ کولانے میں ہورہی دیری کولیکر مودی سرکار پرنشانہ سادھا۔اس کے جواب میں وزیرداخلہ راجنا تھ سنگھ نے بتایاکہ ہماری کابینہ نے اس تجویزکومنظورکرلیاہے، ہم پارلیمنٹ کے اسی سیشن میں پاس کراناچاہتاہیں۔ وزیر داخلہ راج ناتھ سنگھ نے آج کہا کہ درج فہرست ذات و قبائل (ایس سی / ایس ٹی) پر ظلم و زیادتی روکنے کے مقصدسے کابینہ کی جانب سے بدھ کو منظور بل کو پارلیمنٹ کے رواں مانسون سیشن میں ہی پاس کرایا جائے گا۔

 

کانگریس رکن پارلیمنٹ ملک ارجن کھڑگے نے لوک سبھا میں ایس سی -ایس ٹی ایکٹ کا معاملہ اٹھا۔کھڑگے نے کہاکہ ’’سرکارنے اس بیچ کئی آرڈیننس لائے لیکن ایس سی -ایس ٹی ایکٹ کے اوپرکیوں آرڈیننس نہیں لائے، اس پرصفائی دیں‘‘۔راجناتھ سنگھ نے لوک سبھا میں وقفہ صفرکے دوران کانگریس کے لیڈر ملک ارجن کھڑگے کی طرف سے یہ مسئلہ اٹھائے جانے پر کہا ’’سارا ملک آگاہ ہے کہ سپریم کورٹ نے جو حکم دیا تھا اس سے ’درج فہرست ذات و قبائل ظلم و زیادتی روک تھام قانون ‘کمزور ہو گیا تھا۔ وزیر اعظم نریندر مودی نے اسی وقت کہا تھا کہ ہم ایسا ہی یا اس سے بھی سخت قانون لائیں گے۔کل ہی کابینہ نے اس بل کو منظوری دے دی ہے۔ ہم اسی سیشن میں اسے پیش کریں گے اور منظور کرائیں گے۔
خیال رہے کہ سپریم کورٹ نے 20 مارچ 2018 کے اپنے فیصلے میں موجودہ قانون کے اس شق کو ختم کر دیا تھا جس کے تحت ایس سی / ایس ٹی شہریوں کے خلاف کوئی زیادتی ہونے پر ایف آئی آر درج ہوتے ہی بغیر تفتیش کے فوری طور پر گرفتاری لازمی تھی۔یادرہے کہ پارلیمنٹ کا مانسون اجلاس 10 اگست تک ہونا طے ہے اور جمعرات کے بعد اس کی چ6 میٹنگیں ہونی ہیں۔
Share Article

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *