مسلم نوجوان کی زبردستی کٹوائی گئی داڑھی

zafruddin
ہریانہ کے گڑگاؤں میں ایک مسلم نوجوان کوکچھ ہندولڑکوں نے مبینہ طورپر سیلون(نائی کی دکان) لے جاکر زبردستی داڑھی کٹوادی۔ آپ تصویرمیں دیکھتے سکتے ہیں۔ظفرالدین پہلے داڑھی میں ایسے دکھتے تھے جیساکہ فوٹومیں داڑھی کے ساتھ دیکھ رہے ہیں لیکن بھگواشرپسندوں کے ذریعے زبردستی کٹوائی گئی داڑھی،کے بعداب ایسے دکھ رہے کہ جیسا کہ آپ فوٹومیں دیکھ سکتے ہیں۔مظلوم ظفرالدین کا دعویٰ ہے کہ اس کے ساتھ بدسلوکی بھی کی گئی۔انہوں نے کہاکہ اسے پہلے نائی کی دکان میں لے گئے۔ نائی نے اس کی داڑھی کاٹنے سے منع کردیا۔اس کے بعد شرپسندوں نے نائی اورمسلم نوجوان کوبری طرح مار ا، اورنوجوان کو سیٹ پرباندھ کرنائی سے زبردستی داڑھی کوکلین شیو(منڈھوا)کرایا۔مسلم نوجوان میوات کے بادلی گاؤں کا رہنے والا ہے اوروہ گڑگاؤں منڈی سبزی لینے آئے تھے۔
اے بی پی نیوزپورٹل کے مطابق،ظفرالدین نے کہاکہ اس نے زبردستی کرنے والے لڑکوں کوسمجھانے کی کوشش بھی کی۔انہو ں نے کہاکہ ’ہم مسلم ہیں اورہم داڑھی نہیں کٹواتے ہیں۔مذہب اس کی اجازت نہیں دیتاہے۔پھربھی وہ نہیں مانے ، ہارپیٹ کی اورداڑھی پرقینچی چلادی‘‘۔متاثرمسلم نوجوان نے گڑگاؤں کے سیکٹر37تھانے میں شکایت درج کرائی ہے، شکایت کی بنیاد پرپولس معاملے کی جانچ کررہی ہے۔
Share Article

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *