کیرل میں بارش وسیلاب کا قہر،29افرادہلاک،54ہزارلوگ ہوئے بے گھر

keral-flood
کیرل میں بارش اورطوفان سے سیلاب کا قہرجاری ہے۔کیرالہ میں بارش، سیلاب اورمٹی کے تودے (لینڈ سلائڈ)کھسکنے کی وجہ سے اب تک 29 لوگوں کی موت ہو چکی ہے جبکہ تقریباََ 54ہزارلوگ بے گھر ہو گئے ہیں۔ادھروزیراعلیٰ پنرائی وجین اورکئی وزراء سمیت اپوزیشن کے لیڈروں نے سیلاب متاثرہ علاقوں اڈوکی، وایناڈ،کلیکٹ اورکوچکی کا دورہ کیا۔سی ایم پنرائی وجین نے حالات کو ’ سنگین‘ قرار دیا ہے۔
وزارت کے ذرائع نے بتایا کہ صورت حال کی سنگینی کو دیکھتے ہوئے راحت اور بچاؤ مہم میں مدد کے لئے بنگلور سے فوج متاثرہ علاقوں میں بھیجی گئی ہے۔ اس کے علاوہ نیشنل ڈیزاسٹر مینجمنٹ کی چار ٹیموں کو چنئی سے کیرالہ کے لئے روانہ کیا گیا ہے۔ مرکزی حکومت کی ایک ٹیم بھی متاثرہ علاقوں کا دورہ کررہی ہے۔بتایاجارہاہے کہ فوج اور قومی تباہی پر سرگرم رہنے والی فورس کو ا ڈکی ، کوجھی کوڈ ، وائیناڈ اور ملپپورم ضلع کے متاثر علاقوں میں راحت مہم میں انتظامیہ کا ساتھ دینے کے لئے تعینات کیا گیا ہے۔
خبرہے کہ وزیرداخلہ راجناتھ سنگھ12اگست کوکیرل کادورہ کریں گے۔جمعہ کووزیرداخلہ راجناتھ سنگھ نے سی ایم پنرائی وجین سے فون پربات کی اورانہیں بچاؤ اورراحت کاموں کیلئے ہرممکن مدددینے کا بھروسہ دیا۔وزیرداخلہ نے ٹویٹ کرکے بتایاکہ مرکزی وزارت داخلہ کیرل میں سیلاب کے حالات پرنظررکھے ہوئے ہیں۔جنوبی -مغربی مانسون نے کیرل پرقہربرپا رکھاہے۔اس سے ریاست میں گذشتہ دودنوں سے موسلادھار بارش ہورہی ہے۔
Share Article

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *