آسام کے این آرسی لسٹ سے کسی بھی ہندوستانی کا نام نہیں ہٹے گا:وزیرداخلہ

rajnath
گذشتہ کئی دنوں سے آسام کے نیشنل رجسٹرآف سٹیزن (این آرسی) کے معاملے پر پارلیمنٹ کے دونوں ایوانوں میں سرکار اوراپوزیشن کے بیچ گھمسان جاری ہے۔مگرآج سرکار کی طرف سے راجیہ سبھا میں وزیرداخلہ نے بھروسہ دلایاہے کہ این آرسی کی یہ فائنل لسٹ نہیں ہے اورسب کواپنی پہچان ثابت کرنے کا موقع ملے گا۔اسلئے کسی کوگھبرانے کی ضرورت نہیں ہے۔
مسٹر سنگھ نے ہا کہ آسام میں قومی شہری رجسٹر (این آر سی) میں نام درج کرانے میں کسی کے ساتھ امتیازی سلوک اختیار نہیں کیا جائے گا اور سب کو شہریت ثابت کرنے کے کافی مواقع ملیں گے۔مسٹر راج ناتھ سنگھ نے 31 جولائی کو راجیہ سبھا میں وقفہ سوالات ملتوی کرکے این آر سی کے معاملے پر ہونے والی مختصر بحث کا آج وقفہ صفر کے دوران جواب دیتے ہوئے کہا کہ شہریت کا معاملہ قومی سلامتی سے منسلک ہے اور یہ سپریم کورٹ کی نگرانی میں شفاف طریقے سے کیا جا رہا ہے۔لوگوں کی شہریت کے دعووں پر مکمل توجہ دی جائے گی اور مناسب طریقے سے اسے نمٹا جائے گا۔انہوں نے کہاکہ یہ فائنل لسٹ نہیں ہے، جن کا نام این آرسی میں نہیں ہے وہ فارینرس ٹربیونل جاسکتے ہیں۔راجناتھ نے راجیہ سبھا میں کہاکہ این آرسی کی لسٹ سے کسی بھی ہندوستانی کا نام نہیں ہٹے گا۔سب کواس میں شامل کیاجائے گا، بشرطیکہ انہیں اپنی پہچان ثابت کرنی ہوگی کہ وہ ہندوستانی ہیں۔
انہوں نے کہا کہ 30 جولائی کو این آر سی کے حتمی مسودے کی اشاعت ہوئی ہے جو صرف مسودہ ہے، یہ حتمی فہرست نہیں ہے۔ اس کی اشاعت کے بعد کچھ مفاد پرست عناصر سوشل میڈیا کے ذریعے فرقہ وارانہ ہم آہنگی متاثر کرنے اور اسے بین الاقوامی مسئلہ بنانے کی کوشش کر رہے ہیں۔راجناتھ سنگھ نے کہاکہ ہندوستان میں کتنے غیرملکی ہیں ،یہ جانناضروری ہے۔یہ قومی سلامتی سے منسلک معاملہ ہے۔
Share Article

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *