9سالہ بچی کی آبروریزی،مشتعل لوگوں اورپولس کے درمیان جھڑپ ،متعددپولس اہلکارزخمی

Rape-of-minor
راجدھانی دہلی میں بچیوں کے ساتھ جنسی زیادتی کامعاملہ تھمنے کا نام ہی نہیں لے رہا ہے۔ دہلی میں ایک بارپھرنابالغہ بچی کے ساتھ جنسی زیادتی کا معاملہ سامنے آیاہے۔ ویب پورٹل پتریکا ڈاٹ کام کے مطابق، گذشتہ بدھ کو جنوب -مغرب دہلی کے وسنت کنج میں 9سالہ بچی کے ساتھ عصمت دری کا معاملہ سامنے آیاتھا۔ اب اس معاملے پر جمعہ کی دیررات مشتعل لوگوں اورپولس کے بیچ انصاف دلانے کولیکر جم کرجھڑپ ہوئی اورعلاقے میں ماحول کشیدہ ہوگیا۔ مشتعل لوگوں اورپولس کے بیچ ہوئی جھڑپ میں کئی لوگ زخمی ہوگئے۔ زخمیوں میں علاقے کا اے سی پی سمیت 11پولس اہلکار شامل ہیں۔ مشتعل لوگوں نے پولس پرپتھراؤ بھی کیا۔
خیال رہے کہ عصمت دری کے واقعہ کے بعد پولس نے بچی کے بیان کے تحت ملزم کوگرفتارکرلیاتھا لیکن مشتعل لوگوں نے پولس سے ملزم کوان کے حوالے کرنے اورخود موقع پرہی انصاف کا مطالبہ کیا ۔حالانکہ پولس نے ملزم کوسونپنے سے منع کر دیا جس کے بعد پولس اورمشتعل لوگوں میں جھڑپ ہوگئی۔
بتادیں کہ چوتھی کلاس میں پڑھنے والی 9سال کی معصوم بچی رفع حاجت کیلئے اپنے گھر سے باہر گئی تھی۔تبھی ملز م نے اسے اچانک اٹھاکر جنگل کی طرف لے گیا ۔اس کے بعد اس کے ساتھ ریپ کیا اوربچی کوچھوڑکربھاگ گیا۔ ملزم اسی علاقے میں کوڑا چننے کا کام کرتاہے۔
Share Article

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *