تھائی لینڈ: غار سے محفوظ نکالے گئے 4 بچے، کوچ سمیت 9 بچوں کوباہر نکالنے کی مہم ایک بار پھر شروع

thailand-rescue
تھائی لینڈ کی غار میں دو ہفتہ سے پھنسے اسکول فٹ بال ٹیم کے 13اراکین میں سے چار بچوں کو اتوار کو بحفاظت باہر نکال لیا گیا۔ مقامی راحت و بچاو افسر نے بتایا کہ شمالی چیانگ رائے صوبہ کے حکام نے فٹبال ٹیم کے 12بچوں اور ان کے کوچ کو باہر نکالنے کی باہمت اور خطرناک مہم کی آج صبح شروعات کی۔ اس مہم میں 13غیرملکی غوطہ خوروں اور تھائی لینڈ نیوی سیل کے پانچ رکن شامل تھے۔ گزشتہ جمعہ کو ان بچوں کو نکالنے کی کوشش میں ایک سابق تھائی نیو ی سیل کمانڈر کی موت ہوگئی تھی۔
غیر مصدقہ ذرائع سے ملنے والی خبروں کے مطابق ریسکیو کارکنوں نے غار کے اندر پھنسے ہوئے بقیہ آٹھ بچوں اور ان کے کوچ کو نکالنے کا کام دوبارہ شروع کر دیا ہے۔وہاں پر موجود بی بی سی کے عملے نے جائے وقوعہ پر کئی ایمبولینسوں کو غار کے پاس جاتے ہوئے دیکھا ہے۔واضح رہے کہ بچوں کو غار سے نکالنے کا عمل کافی طویل اور پیچیدہ ہے جس کے لیے غوطہ خوروں کو پانچ گھنٹے غار کے اندر سفر کرنا پڑتا ہے جب کہیں جا کر وہ اس مقام پر پہنچتے ہیں جہاں بچے موجود ہیں اور انھیں ایک ایک کر کے واپس لایا جاتا ہے۔
بتایاجارہاہے کہ رات ہونے کی وجہ سے باقی بچے آٹھ بچوں اور ان کے کوچ کو پانی میں ڈوبے ہوئے علاقہ سے نکالنے کی مہم اب پیر کی صبح شروع کی جائے گی۔ ان میں سے بیشتر بچوں کی عمر 11برس سے کم ہے اور انہیں تیرنا بھی نہیں آتا جبکہ ان کے کوچ کی عمر 25برس ہے۔بچاؤ مہم کے سربراہ نارونگساک اوسوتانکون نے نامہ نگاروں سے کہاکہ آج ہم چا ر بچوں کو بحفاظت باہر نکالنے اور انہیں چیانگ رائے صوبہ کے اسپتال پہنچانے میں کامیاب ہوئے۔انہوں نے کہا کہ بچاؤ دستہ کو اگلی مہم کی تیاری کرنے کے لئے دس گھنٹے کے وقت کی ضرورت ہے۔ اس میں پچاس غیرملکی سمیت تقریباََ 90 غوطہ خور شامل رہیں گے۔غار سے نکالے گئے چاروں بچوں کو ہیلی کاپٹر سے نزدیکی چیانگ رائے شہر پہنچایا گیا جہاں پہلے سے موجود ایمبولنس کی مدد سے انہیں اسپتال میں داخل کرایا گیا۔
Share Article

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *