افغانستان :جلال آبادمیں سکھوں پر حملہ، 20افرادہلاک

sikh-afganistahn
افغانستان کے مشرقی شہرجلال آباد میں اتوار کو سکھوں کو نشانہ بناکر کئے گئے شدید دھماکہ میں کم از کم 20لوگوں کی موت اور 20سے زائدافراد زخمی ہوگئے۔مقامی میڈیا کے مطابق جلال آباد میں ہونے والے خودکش حملے میں سکھوں کو نشانہ بنایا گیا، حملہ ہوتے ہی سیکیورٹی اداروں نے جائے وقوعہ کو گھیرے میں لے لیا جب کہ ریسکیو اداروں نے زخمیوں اور لاشوں کو اسپتال میں داخل کیا۔
گورنر کے ترجمان عطا اللہ کھوگیانی نے بتایا کہ صدر اشرف غنی کے جلال آباد میں ایک اسپتال کا افتتاح کرنے کے کچھ گھنٹے بعد ہوئے اس دھماکہ میں مکھوبیرات چوک کے نزدیک کئی دکانوں کو نقصان پہنچا اور مکانات منہدم ہوگئے۔دھماکے کے بعد آسمان پر دھویں کے بادل چھا گئے اور عمارتوں کو بھی شدید نقصان پہنچا۔نانگرہار کے پولیس سربراہ غلام سنائی ستانیک زئی نے بتایا کہ ایک خودکش حملہ آور نے سکھوں کو لیکر جارہی ایک گاڑی کو نشانہ بناکر حملہ کیا۔ حملہ کے وقت سکھ فرقہ کے لوگ صدر سے ملاقات کرنے آئے تھے۔ انہوں نے کہاکہ حملہ میں مرنے والے بیشتر لوگ سکھ فرقہ کے ہیں۔حکام کا کہنا ہے کہ خودکش حملہ آور نے افغان صدر سے ملنے کے لیے آنے والے سکھ اقلیت کو نشانہ بنایا۔بتایاجارہاہے کہ سکھوں کا ایک گروپ افغان صدراشرف غنی سے ملاقات کے لیے جارہا تھا جو اس وقت صوبے کے دورے پر تھے۔
دوسری جانب ہندوستان کے وزیر اعظم نریندرمودی نے ٹویٹ کرکے جلال آباد دھماکے کی مذمت کی۔ پی ایم مودی نے افغانستان میں خودکش حملہ کی سخت مذمت کرتے ہوئے اسے وہاں کے کثیر ثقافتی ڈھانچے پر حملہ قرار دیا ہے۔پی ایم مودی نے کہاکہ میں مرنے والوں کے اہل خانہ کے ساتھ ان کے غم میں شریک اورمیں دعاگوہوں کہ زخمی افرادجلدازجلدصحتیاب ہوجائے۔
Share Article

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *