انسانیت شرمسار،اسپتال نے نہیں دی گاڑی، ماں کی لاش کوموٹرسائیکل سے باندھ کر لے گیابیٹاپوسٹ مارٹم ہاؤس

dead-body
مدھیہ پردیش میں طبی سہولیات کی حالت کیسی ہے ، اس کا اندازہ تازہ واقعہ سے لگاسکتے ہیں ۔اتناہی نہیں، ترقی کے تمام دعوؤں کے بعد ہمارے سماج میں ایسے ایسے واقعات سامنے آتے ہیں ،جوسرکارکے دعوؤں کی پول کھول کررکھ دیتی ہے۔اس بارمدھیہ پردیش کے تکمگڑھ کے ایک ضلع اسپتال نے پوسٹ مارٹم کیلئے لے جانے کیلئے لاش گاڑی دینے سے انکارکردیا، جس کے بعد بیٹے کومجبورہوکراپنی ماں کوموٹرسائیکل باندھ کرپوسٹ مارٹم ہاؤس لے جانا پڑا۔بہرکیف سرکاری ایمبولینس(لاش لے جانے والی گاڑی) نہیں ملنے کے باعث ایک خاتون کی لاش کواس کے بیٹے نے موٹرسائیکل پرباندھ کرپوسٹ مارٹم ہاؤس لے گیا۔بتایاجارہاہے کہ خاتون کی موت گذشتہ سموارکوسانپ کاٹنے سے ہوئی تھی،جس کے باعث پولس نے لاش کی پوسٹ مارٹم کرانے کی بات کہی۔خاتون کے بیٹے نے سرکاری گاڑی یعنی لاش لے جانے والی گاڑی کیلئے کئی بارفون کیا، لیکن کوئی انتظام نہیں پایا۔اخیرمیں بیٹے نے اپنی ماں کی لاش کوموٹرسائیکل پرباندھ کرپوسٹ مارٹم گھر پہنچایا۔

دراصل، موہن گڑھ تھانہ علاقے کے مستاپورگاؤں کی رہنے والی بزرگ خاتون کنوربائی ونشکارکی گذشتہ پیرکوسانپ کاٹنے سے موت ہوگئی تھی۔اس کی جانکاری اہل خانہ نے موہن پولس کودی ۔بیٹے کا کہناہے کہ پولس نے موقع پرپہنچ کرلاش کوپوسٹ مارٹم کیلئے بھیجنے کی بات کہی۔ پولس نے خاتون کی لاش کوخودپوسٹ مارٹم کیلئے لے جانے کی زحمت نہیں اٹھائی، بلکہ اس کے بیٹے کوکہاکہ وہ لاش کوضلع اسپتال لے جائے۔اس کے بعدخاتون کے بیٹے نے لاش کولے جانے کیلئے سرکاری گاڑی کوکئی بارفون کیا لیکن کوئی جواب نہیں ملا۔اس کے بعد بیٹے نے ماں کورسی کے سہارے باندھ کرضلع اسپتال پہنچایا۔یہ خبرمیڈیامیں آنے کے بعدڈی ایم نے جانچ کے حکم دیئے ہیں۔
Share Article

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *