شانتی بھوشن کی عرضی خارج ،سی جے آئی ہی ہیں ’ماسٹر آف روسٹر‘: سپریم کورٹ 

سپریم کورٹ نے آج (جمعہ) کو ایک بار پھر صاف کردیا ہے کہ ملک کے چیف جسٹس (سی جے آئی) ہی ’ماسٹر آف روسٹر‘ ہیں اوراس میں کوئی تنازعہ نہیں ہے۔کیسوں کے تقسیم میں سی جے آئی کامطلب چیف جسٹس آف انڈیا ہے ،نہ کہ کالجےئم ۔سپریم کورٹ نے ججوں کوکیس تقسیم کرنے کے عمل میں بدلاؤ کرنے سے انکارکردیاہے۔یعنی کیس تقسیم کرنے کے اختیارات چیف جسٹس کے پاس ہی رہے گا۔سپریم کورٹ نے شانتی بھوشن کی عرضی خارج کرتے ہوئے یہ فیصلہ سنایاہے۔
جسٹس اے کے سیکری اور جسٹس اشوک بھوشن کی بنچ نے معروف وکیل شانتی بھوشن کی عرضی کا تصفیہ کرتے ہوئے کہا کہ عدالت عظمی میں مقدموں کے الاٹمنٹ (روسٹر) کے لئے چیف جسٹس ہی مجاز ہیں۔ گذشتہ آٹھ ماہ کے دوران عدالت نے تیسری مرتبہ اس بات کی تصدیق کی ہے۔سپریم کورٹ نے کہا کہ سی جے آئی سب سے سینئر جج ہونے کی وجہ سے عدالت کی انتظامیہ کی قیادت کرنے کا حق رکھتے ہیں ، جس میں کیسوں کی تقسیم کرنا بھی شامل ہے۔
یادرہے کہ سابق وزیرقانون شانتی بھوشن نے مطالبہ کیاتھاکہ کیس تقسیم کرنے کا اختیارصرف چیف جسٹس کونہیں ہوناچاہئے۔انہو ں نے کہاکہ تھاکہ پانچ سینئرججوں کومل کرکیسوں کوتقسیم کرناچاہئے۔خیال رہے کہ عدالت نے عرضی پر 27 اپریل کو اپنا فیصلہ محفوظ کرلیا تھا۔

Share Article

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *