نابالغ طالبہ سے اسکول میں 7مہینے تک اجتماعی آبروریزی،پرنسپل سمیت چارگرفتار 

ekma-police-station
بہارکے چھپراضلع کے ایکما تھانہ علاقے کے پارسا گڑھ ودیالیہ کی ایک طالبہ کے ساتھ اجتماعی آبروریزی اوربلیک میل کرنے کا معاملہ تھانہ میں درج ہواہے۔معاملے میں ودیالیہ کے ساتھ ہی دوٹیچراور15طلباپراجتماعی آبروریزی اوربلیک میلنگ کرنے کا الزام لگاہے۔پولس نے ان میں سے چارکوگرفتارکرلیاہے جس میں پرنسپل ، دوطلبا اورٹیچرشامل ہیں۔یہ جانکاری سارن ایس پی نے دی ہے۔نابالغ طالبہ نے الزام لگایاہے کہ اس کے ساتھ اسکول کے پرنسپل ، ٹیچراورطلباکے ذریعہ جنسی زیادتی اوربلیک میلنگ کی گئی ہے۔اسے لیکرنابالغ طالبہ نے مقامی ایکماتھانہ میں شکایت دیکراسکول کے پرنسپل، دوٹیچراور15طلباکے اوپر بلیک میل کرکے ریپ کرنے کا معاملہ درج کرایاہے۔بتایاجارہا ہے کہ اسکول کی طالبہ کے ساتھ پہلے اجتماعی آبروریزی کی گئی اور اس کے بعد بلیک میل کرکے گزشتہ 7 ماہ سے اس کے ساتھ مسلسل آبروریزی کی گئی۔
پولیس سپرنٹنڈنٹ ہرکشور رائے نے پریس کانفرنس میں بتایا کہ دسمبر 2017 میں ایکما تھانہ کے پرساگڑھ میں ایک اسکول کی طالبہ کے ساتھ اس کے ساتھیوں نے اجتماعی آبروریزی کی۔ انہوں نے بتایا کہ اس کی خبرملنے کے بعد ملوث طالب علموں کے خلاف کارروائی کرنے کے بجائے اسکول کے دیگر ہم جماعتوں اوربہت سے اساتذہ طالبہ کو بلیک میل کرکے گزشتہ سات ماہ سے اس کے ساتھ آبروریزی کی۔ہرکشور رائے نے بتایا کہ اس معاملے میں ایکما تھانے میں اسکول کے ہیڈ ماسٹر، دو استاد اور 15 طالب علموں کے خلاف نامزد ایف آئی آر درج کرائی گئی۔ اس کے بعد پولیس نے فوری کارروائی کرتے ہوئے ہیڈماسٹر، ایک استاد اور دو طلباکو گرفتار کر لیا ہے۔
Share Article

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *