مودی سرکارکے خلاف عدم اعتماد کی تحریک پرلوک سبھا میں بحث شروع

lok-sabha
پارلیمنٹ کے مانسون سیشن میں آج لوک سبھا میں مرکزی حکومت کے خلاف اپوزیشن پارٹیوں کے ذریعہ لائی گئی عدم اعتماد کی تحریک پر بحث شروع ہوگئی ہے اور شام چھ بجے اس پر ووٹنگ ہوگی۔پارلیمنٹ کے مانسون سیشن کی کارواہی شروع ہوگئی ہے۔ بی جے ڈی جے لوک سبھا سے واک آؤٹ کردیا۔ عدم اعتماد تحریک لوک سبھا میں پیش کرتے ہوئے تیلگودیشم پارٹی رکن پارلیمنٹ جے دیوگلا نے کہاکہ مودی سرکار نے آندھراپردیش سے کیاوعدہ پورا نہیں کیا۔پارلیمنٹ میں مودی سرکارکیلئے آج اگنی پریکشا ہے۔
سرکارکی جانب سے جیت کا دعویٰ کیاجارہاہے تووہیں اپوزیشن کوبھروسہ ہے کہ عدم اعتماد تحریک کے ذریعے سرکارکوپارلیمنٹ میں بے نقاب کرنے کا موقع ملے گا۔ عدم اعتماد تحریک میں سبھی پارٹیوں کے بولنے کا وقت طے کردیاگیاہے۔ تعداد کے حساب سے پارٹیوں کے اوقات طے ہوئے ہیں۔بی جے پی کوسب سے زیادہ 3گھنٹے اور33منٹ بولنے کا وقت ملا ،جبکہ کانگریس کو38منٹ کا وقت دیاگیاہے۔حکومت کے خلاف عدم اعتماد کی تحریک پیش کرنے والی ٹی ڈی پی آج لوک سبھا میں اس پر بحث کی شروعات کرے گی۔ وزیر اعظم مودی نے آج صبح اس سلسلہ میں ایک ٹویٹ بھی کیا۔ وزیر اعظم نے ٹویٹ میں لکھا کہ آج ہماری پارلیمانی جمہوریت کا ایک اہم دن ہے۔
Share Article

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *