کنبھ میلے کے راستے کووسیع کرنے کیلئے مسلمانوں نے گرا یا قبرستان اورمسجد کا ایک حصہ

masjid
ملک میں کہیں نہ کہیں فرقہ وارانہ فسادات، ماب لنچنگ جیسے واقعات کی خبریں آتی رہتی ہیں لیکن تیرتھ نگری الہ آبادکے مسلم باشندوں نے فرقہ وارانہ ہم آہنگی اوربھائی چارے کی ایک نئی مثال پیش کی ہے۔دراصل،اولڈ سٹی علاقے کمبھ میلے کیلئے جانے والی سڑک کووسیعکیاجارہاتھا۔لہذا مسلم سماج کے لوگوں نے 2019میں انعقادہونے والے کمبھ میلے کیلئے خودمسجدقبرستان اورمسجدکی دیوارمہندم کردیاہے۔کمبھ میلے کے پیش نظرمسلم کمیونٹی کے لوگوں نے مسجدکے ایک حصہ کوگرادیاہے۔اس انوکھی پہل کوصرف اترپردیش میں ہی نہیں ملک بھرمیں سراہاجارہاہے۔تعاون کا ایک بڑی مثال دیتے ہوئے الہ آباد کے راجروپورعلاقے کے لوگوں نے نہ صرف مہاکمبھ کیلئے مددکی بلکہ سماج کوآپسی بھائی چارے اوریکجہتی کا بڑاپیغام دیا۔
Muslims-demolished-masjid
خبروں کے مطابق، مسجدکی دیواراورقبرستان کومنہدم کرنے والے مسلم سماج کے لوگوں نے کہاکہ یہ کام اچھے اورنیک کام کیلئے کیاجارہاہے،جس کے لئے انہو ں نے اپنی رضامندی سے تعاون دیا۔وہاں کے باشندہ مسلمانوں نے کہاکہ ہم نے یہ خود اپنی مرضی سے کیا ہے۔مسجد کا یہ حصہ سرکاری زمین پر بنا تھا۔اسی وجہ سے اسے منہدم کر دیا گیا۔کنبھ میلے سے پہلے حکومت راستے وسیع کر رہی ہے اور ہم بھی اس میں ساتھ دے رہے ہیں۔غور طلب ہے کہ کنبھ میں شاہی اسنان کی شروعات 15 جنوری سے ہوگی۔پریاگ کے سنگم تٹ پر لگنے والے اس میلے میں لاکھوں کی تعداد میں ملک غیر ملک سے عقیدت مند یہاں پہنچتے ہیں۔
یوپی کے الہ آباد میں لگنے والے کنبھ میلے کی تیاریوں میں مسلم گروپ کے لو گ بھی بڑھ چڑھ کر حصہ لے رہے ہیں۔اسی ترتیب میں راستہ چوڑا کرنے میں رکاوٹ بن رہی مسجد کے کچھ حصوں کو مسلموں نے منہدم کردیا۔در اصل اگلے سال لگنے والے کنبھ میلے کیلئے پرانے شہر میں تیزی سے تعمیر کام جاری ہے۔اس میلے میں لاکھوں کی تعداد میں پہنچنے والے عقیدت مندوں کیلئے راستوں کو وسیع کیا جا رہا ہے۔لیکن مسجد کے ایک حصے کی کام میں رکاوٹ آ رہی تھی۔اس کے بعد علاقے کے مسلم لوگوں لوگ خود آگے آئے اور مسجد کے اس حصے کو گرا دیا۔
دراصل ،الہ آبادڈپولپمنٹ اتھارٹی(اے ڈی اے)کے ذریعہ مہاکمبھ کولیکرسڑک چوڑی اورمرمت کاکام کیاجاناتھاجس کے لئے کئی مکانوں وپلاٹوں کوہٹایاجارہاتھا۔اسی بیچ راجروپورعلاقے کی ایک مسجداوربیچ میں آرہے قبرستان کاایک حصہ یہاں رہنے والے مسلم سماج کے لوگوں نے مہندم کردیا۔خاص بات یہ ہے کہ کام یہاں بہت ہی پرامن طریقے سے کیاگیا۔جسے لیکرمسلم سماج کے لوگوں نے نئی مثال قائم کی ہے۔
Share Article

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *