مسلم پرسنل لاء بورڈ کی میٹنگ میں دارالقضا ودیگرامورپرتبادلۂخیال

muslim-personal-law-board
آل انڈیا مسلم پرسنل لابورڈ کی مجلس عاملہ کی میٹنگ مورخہ 15جولائی 2018 بروز اتوار کو صبح دس بجے نیو ہورائزن اسکول حضرت نظام الدین نئی دہلی میں منعقد ہوئی جس کی صدارت نائب صدر محترم حضرت مولانا جلال الدین انصر عمری (امیر کل ہند جماعت اسلامی )نے کی ، حضرت صدر محترم اپنی علالت کی وجہ سے شریک نہیں ہوسکے یہ میٹنگ صبح دس بجے سے سہ پہر تین بجے تک جاری رہی اور معززارکان عاملہ نے پہلے سے طے شدہ ایجنڈے پر کافی سیر حاصل بحث کی ، اور اتفاق رائے سے چند فیصلے کئے گئے۔
اصلاح معاشرہ کمیٹی کی رپورٹ پیش ہوئی اور اس کے کاموں کو وسیع کرنے اور ملک کے مختلف اضلاع اور ریاستوں میں مرکزی، ریاستی اور ضلعی کمیٹیوں کے قیام کے بارے میں فیصلہ کیا گیا اور اس میں تیز رفتاری لانے کی بات طے کی گئی ، دارالقضاء کے سلسلے میں بورڈ کی طرف سے دوبارہ یہ بات دوہرائی گئی کہ دارالقضاء پیرلل کورٹ (متوازی عدالت)نہیں بلکہ یہ آربٹریشن اور کونسلنگ کا کام کرنے والے مراکز ہیں اور ان کے ذریعہ بہت سے مسائل حل ہوتے ہیں خاص طریقہ پر بہت ساری مسلمان خواتین کے مسائل دارالقضاء کے ذریعہ ماضی میں حل ہوئے ہیں اور اب بھی حل کئے جارہے ہیں، دارالقضاء متوازی عدالت نہیں ہے بلکہ یہ عدالتوں کا بوجھ کم کرنے کا ذریعہ ہے، لاکھوں مقدمات عدالتوں میں پینڈنگ ہیں اور ان کے فیصلے کیلئے ہی بہت سارا وقت در کار ہے، ایسی صورت حال میں درالقضاء کے ذریعہ آپس میں سمجھوتے سے جو معاملات حل کئے جارہے ہیں وہ قابل قدرکوشش ہیں اور سپریم کورٹ کا 7جولائی 2014 کا فیصلہ اس بات کو واضح کرچکا ہے کہ دارالقضاء پیرلل کورٹ نہیں ہے، تیسری بات ہم جنسی سے متعلق مسلم پرسنل لا بورڈ کے اس اجلاس میں اتفاق رائے سے یہ بات طے ہو ئی کہ یہ عمل ہر مذہب میں جرم ہے ،اس سے انسانی صحت بھی برباد ہوتی ہے،اور خاندانی نظام بھی تباہ ہوتا ہے،اس لئے ایسے حساس مسئلے میں جس کا اثر پورے ملک پر پڑنے والا ہے، گورنمنٹ کا غیر جانبدار رہنا نامناسب ہے، آل انڈیا مسلم پرسنل لا بورڈ کا یہ اجلاس عاملہ گورنمنٹ سے اپیل کرتا ہے کہ وہ اس سلسلے میں مضبوط اسٹینڈ لے اور غیر جانبدار ی کے بجائے ہم جنسی کو جرم کے دائرے سے خارج کرنے والی د رخواست پر اپنا اسٹینڈ ظاہر کرے اور اس کے خلاف موثر کاروائی کرے، اس کے علاوہ سوشل میڈیاڈیسک ، بابری مسجد کے مقدمے اور مسلم پرسنل لا بورڈ کی دیگر سرگرمیوں پر بھی گفتگو ہوئی اور لائحہ عمل طے کیا گیا۔
15جولائی کو ورکنگ کمیٹی کی اس میٹنگ میں نائبین صدر میں سے مولانا جلال الدین انصر عمری ، مولانا فخر الدین ا شرف جیلانی ، مولانا کاکا سعید عمری شریک ہوئے ،جنرل سکریٹری مولانا سید محمد ولی رحمانی نے کاروائی چلائی اور سکریٹریز ،جناب مولانا خالد سیف اللہ رحمانی ،جناب ظفر یاب جیلانی ،جناب مولانا فضل الرحیم مجددی ،جناب مولانا محمد عمرین محفوظ رحمانی اور معزز ارکان عاملہ میں سے جناب مولانا عبداللہ مغیثی ،جناب قاسم رسول الیاس،جناب مولانا سید اطہر علی اشرفی، جناب مولانا اصغر امام مہدی سلفی ،جناب کمال فاروقی ،جناب مولانایاسین علی عثمانی بدایوانی،جناب مولانا مفتی احمد دیولوی ،مولانا پروفیسر سعودعالم قاسمی ،مولانا عتیق احمد بستوی، جناب ایڈوکیٹ یوسف حاتم مچھالہ،جناب ایڈوکیٹ شمشاد ، جناب ایڈوکیٹ طاہرحکیم اور دیگر حضرات نے شرکت کی۔
Share Article

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *