فیفاعالمی کپ میں مسلم کھلاڑیوں کی شاندارکارکردگی 

muslim-football-players
فیفا عالمی کپ 2018ٹورنامنٹ 14جون سے روس میں جاری ہے۔ فٹ بال کے اس سب سے بڑے خطاب کیلئے دنیاکی 32ٹیمیں ’پیروں کی جنگ‘ لڑرہی ہیں۔ دنیاکاسب سے مقبول ترین کھیل فٹ بال عالمی کپ ٹورنامنٹ میں دنیاکے مختلف مذاہب سے تعلق رکھنے والے کھلاڑیوں کے ساتھ ساتھ مسلم کھلاڑی بھی دم خم کے ساتھ اپناجلوہ دکھا رہے ہیں۔اس فٹ بال عالمی کپ میں دنیاکی 32ٹیموں کے کل 736کھلاڑی میدان میں اترے ہیں۔ جہاں دنیاکی 32ممالک کی ٹیمیں خطاب اپنے نام کرنے کیلئے میدان میں پیروں سے جنگ لڑ رہی ہیں ،تووہیں سات مسلم ممالک مصر، سعودی عرب، مراکش، ایران، نائیجریا، تیونس اورسینگال کی ٹیموں کے کھلاڑی بھی میدان میں پیروں سے جنگ لڑ رہے ہیں۔خبروں کے مطابق،مذکورہ مسلم ممالک کی ٹیموں میں اکثریت مسلم کھلاڑیوں کی ہے۔ مسلم ممالک کے علاوہ دیگرٹیموں میں بھی مسلم کھلاڑیوں کی تعدادچونکانے والی ہے۔فیفاکے اعدادوشمارکے مطابق، رواں عالمی کپ میں کل 736کھلاڑی میدان میں ہیں ،جن میں 155مسلم کھلاڑی ہیں۔
فرانس کے پوگیا اورجرمنی کے مسعود اوزیل جیسے معروف کھلاڑیوں کے علاوہ دیگرممالک کی ٹیموں میں بھی مسلم کھلاڑیوں نے اپنی عمدہ صلاحیت اورشاندارکاکردگی کے دم پر جگہ بنائی ہے۔مسلم ممالک کے علاوہ دیگرٹیموں میں مسلم کھلاڑی پرنظرڈالتے ہیں۔ روس میں واحدمسلم کھلاڑی دالر کوزائف ہیں۔بلجیم میں کل تین مسلم کھلاڑی ہیں موسیٰ دیمبیلی، مروان فیلاینی اورعدنان یانوزای بلجیم کی نمائندگی کررہے ہیں۔فرانس کی ٹیم میں کل سات مسلم چہرے ہیں، جن میں بینجامن میندی، عادل رامی، جبریل سیدیبی، نغولوکانتی، پال بوگیا، عثمان دیمبیلی اورنبیل فقیر شامل ہیں۔جرمنی کی ٹیم میں مسعود اوزیل ،انطونیورودیجیر ، ایلکای غوندوغان اور سامی خضیرہ نمائندگی کررہے ہیں۔ فرانس کی ٹیم میں جہاں سات مسلم کھلاڑی ہیں ،وہیں سوئٹزرلینڈ کی ٹیم میں بھی سات مسلم چہرے ہیں۔ یوہان یجورو، شیردان شاقیری، غرانیت جاکا، بلیریم جیمایلی، حارث سیفیروفیتش، اسٹیفنزبیر اوردینیس زکریا شامل ہیں۔آسٹریلیاکی ٹیم میں دومسلم کھلاڑی ہیں ۔ ان میں سے ایک عزیزبیہچ اوردوسرے اروڈدنیل ارزانی ہیں۔ خاص بات یہ ہے کہ دنیل اس ٹورنامنٹ میں سب کم عمرکھلاڑی ہیں۔وہیں انگلینڈ کی ٹیم میں دیلی علی واحدمسلم کھلاڑی ہیں۔
بہرکیف جاری فٹ بال عالمی کپ میں متعدد مسلمان اسٹارفٹ بالرزاپنی حکمرانی قائم رکھتے ہوئے میدان پراپنا جلوہ بکھیررہے ہیں۔ان میں مصرکے محمدصالح ،فرانس کے پال پوگبا،سیدومانے ،مسعوداوزل ،کریم بن زیما، زین الدین زیدان ، فرینک ریبری ، ایڈن زیکو، یحییٰ، کولوطورے، ریاض مہریز،نکولس انیلکا سمیت دیگرفٹ بال کھلاڑی اپنی شاندار کار کردگی سے دنیا بھر میں اپنے مداحوں کے دل و دماغ پر چھائے ہوئے ہیں۔ ان مسلم کھلاڑیوں نے عالمی مقابلوں کے دوران بھی اسلامی روایات کو برقراررکھاہے۔کھیل کے دوران میدان میں اپنی جیت کا جشن،سجدے میں گرکر اور آسمان کی طرف ہاتھ اٹھا کراللہ کا شکر ادا کرتے ہیں۔ اسپورٹس قلم کارکلثوم جہاں نے درج ذیل سابق وموجودہ مسلم کھلاڑیوں کا تعارف کرایاہے۔
نعیم:پہلے مسلمان فٹ بالراسپین سے تعلق رکھنے والے نعیم کا اصل نام محمد علی عمار ہے۔ وہ پانچ برس تک انگلش پریمیئر لیگ کے کلب ٹوٹہنم ہاٹ اسپر سے وابستہ رہے۔ ان کی شہرت کی وجہ 1993میں اے ایف کپ کے کوارٹر فائنل میں مانچسٹر سٹی کے خلاف ہیٹ ٹرک تھی۔
محمد صالح:محمد صالح کا تعلق مصر سے ہے ، ان کا پورا نام محمد صالح غالی ہے۔صالح نے جون 2017 میں انگلش پریمیئر کلب لیور پول جوائن کیا اور 10برس بعداسے چمپئنز لیگ کے سیمی فائنل میں پہنچانے میں کلیدی کردار ادا کیاتھا
پاول پوگبا:مانچسٹر یونائیٹڈ کے سینٹرمڈفیلڈر پاول پوگباکا شمار دنیا کے مہنگے ترین فٹ بالرزمیں ہوتا ہے۔25سالہ فرانسیسی نژاد فٹ بالر کا تعلق گنی سے ہے۔ان کی والدہ مسلمان تھیں، بعد ازاں پال نے بھی اسلام قبول کرلیا
سیدومانے :سیدو مانے ، انگلش کلب لیور پول کی جانب سے کھیلنے والے دوسرے مسلمان فٹ بالر ہیں۔ سیدومانے نے یوئیفاچمپئنز لیگ کے کوارٹر فائنل میں مانچسٹر سٹی کو آؤٹ کلاس کرنے میں اہم کردار اداکیا اور لیور پول کو 10 سال بعد یوئیفاچمپئنز لیگ کے ٹاپ فور میں پہنچایا۔
زین الدین زیدان:دنیا کے نامور فٹ بالر،زین الدین زیدان کا شمار فرانس کے لیجنڈ کھلاڑیوں میں ہوتا ہے۔ انہیں 2001 میں تاریخ کے مہنگے ترین کھلاڑی ہونے کا اعزاز حاصل تھا۔ انہیں 34سال کی عمر میں فیفا ورلڈ کپ گولڈن بال جیتنے کا اعزاز ملا۔زیدان 1998میں ورلڈ کپ اور 2000میں یورو کپ کے بہترین کھلاڑی قرار پائے
مسعود اوزیل:انگلش پریمیئر لیگ میں تہلکہ مچانے والے ترک نژادمسلمان فٹ بالرکا تعلق جرمنی سے ہے۔ وہ قومی ٹیم کے ساتھ ساتھ انگلش فٹ بال کلب، آرسنل کی نمائندگی کرتے ہیں۔ اس سے قبل وہ ہسپانوی کلب ریال میڈرڈ،ورڈیر بریمین اور شالکے 04کی جانب سے بھی کھیل چکے ہیں۔جرمن مڈفیلڈر 2014 میں فیفاورلڈ کپ جیتنے والی جرمنی کے ٹیم اسکواڈ میں شامل تھے۔
کریم بن زیما:الجزائرکے مسلم گھرانے سے تعلق رکھنے والے فرانسیسی کھلاڑی، کریم بن زیماکا پورا نام کریم مصطفیٰ بن زیما ہے جو ”اسٹرانگ اینڈ پاور فل”اور میچ وننگ کی صلاحیت رکھتے ہیں۔کریم، 2011، 2012 اور2014 میں فرنچ پلیئر آف دی ائیر کا ایوارڈ حاصل کرچکے ہیں۔خیال رہے کہ گزشتہ عالمی کپ میں 98مسلم کھلاڑیوں نے مختلف ٹیموں کی جانب سے شرکت کی تھی۔
Share Article

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *