مدارس ڈریس کوڈ معاملہ پرمحمداعظم خان نے یوگی حکومت سے پوچھے سوال

azam-khan
یوپی کے مدارس میں ڈریس کوڈ نافذ کرنے پرسماج وادی پارٹی کے سینئر لیڈر اعظم خان نے سرکارپرتیکھاحملہ کیاہے۔انہو ں نے یوگی حکومت پرحملہ کرتے ہوئے کہاکہ سرکارڈریس کوڈ نافذکرنے کے ساتھ اس پرعمل نہ کرنے پرسزابھی بتادے۔اعظم خان نے کہا کہ سرکار نے ابھی آدھی بات کہی ہے۔انہوں نے کہا کہ اگر ڈریس کوڈ نافذ نہ ہوا اور مدارس نے نافذ نہیں کیا تو سزا کیا ہوگی؟محمداعظم یہیں پرنہیں رکے ، انہوں نے رامپور میں میڈیا سے بات کرتے ہوئے کہاکہ سرکارحکم پرعمل نہ کرنے والے مدرسوں پر بلڈوزر چلوادے یا ٹیچروں پر تیزاب ڈلوادے ۔
اعظم خان نے مدارس میں یوگی حکومت کے ذریعے این سی ای آر ٹی نصاب نافذ کرنے پرکہا کہ’صاحب‘جو چاہے کریں۔اگر وہ ایسا نہ کریں تو کیا ہوگا یہ بھی بتائیں۔انہوں نے کہا کہ حکومت کو پر جرم کی سزا کا بھی اعلان کر دیناچاہئے تاکہ ایک بار پھر بحث میں یہ بات آ جائے کہ اندرا گاندھی کی ایمرجنسی کیا تھی اور نریندر مودی کی ایمرجنسی کیا ہے۔اعطم خان نے کہا کہ اندرا گاندھی کی ایمرجنسی اعلانیہ تھی۔نریندر مودی کی غیراعلانیہ ہے۔اعلانیہ سے غیراعلانیہ ایمرجنسی زیادہ خطرناک ہے۔
خیال رہے کہ مدرسوں میں ڈریس کوڈ کے معاملے پربدھ کومدرسہ دارالعلوم فرنگی محلی نے کہاکہ مدرسوں میں مشکل سے ایک یادوفیصدمسلم بچے تعلیم حاصل کرتے ہیں۔سرکارکوان کیلئے فکرکرنے کی ضرورت نہیں ہے۔ان کے لئے کیابہترہے، اورکیانہیں، یہ ہم پرچھوڑدیں۔
وہیں صوفی نظام نے مدرسوں کے روایتی پہناوے پرسرکارکے ذریعہ چھیڑچھاڑکاالزام لگاتے ہوئے سوال کیاکہ ملک بھرمیں چل رہے کالجوں اوراسکولوں میں ڈریس کوڈ نافذکرنے کے اختیارات ادارے کی منتظمہ کمیٹی کوہوتاہے،پھرمدرسوں میں تفریق کیوں؟عیاں رہے کہ منگل کومسلم وقف اوروزیرحج محسن رضا نے مدرسوں میں ڈریس کوڈ نافذنے کا اعلان کیاتھا۔
Share Article

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *