مدرسے ہماری دینی زندگی میں رہنمائی کے لیے ناگزیر: پروفیسراخترالواسع

Marwar-Muslim-Educational
جودھپور:مدارسِ اسلامی راجستھان دین اور دنیا دونوں کی تعلیم میں غیر معمولی رول ادا کر رہے ہیں اور وزیر اعلیٰ محترمہ وسندھرا راجے کی ہدایت پر سرکار نے بھی مدرسوں کے طلبہ و طالبات کو وہ تمام سہولتیں اور مراعات فراہم کی ہیں جو کہ دیگر تعلیمی اداروں کی دی جا رہی ہیں، چاہے وہ دودھ کی تقسیم ہو یا مڈ ڈے میل، نصاب کی فراہمی ہو یا اسکول بیگ کو مہیا کرانا۔ یہ باتیں ریاستی وزیر مملکت کا درجہ حاصل راجستھان پردیش مدرسہ بورڈ کی صدر محترمہ مہرالنساء ٹاک نے آج ایک عظیم الشّان اجتماع میں کہیں۔ یہ اجتماع مارواڑمسلم ایجوکیشنل اینڈ ویلفیئر سوسائٹی کے زیر انتظام چلنے والے مدرسہ کریسینٹ پبلک اسکول اور مدرسہ مولاناآزاد کے اپر پرائمری اسکول کے احاطے میں منعقد ہوا۔ اس میں محترمہ مہرالنساء ٹاک نے طلبہ و طالبات کو ان پورنا دودھ یوجنا کے تحت نہ صرف دودھ تقسیم کیا بلکہ راجستھان مدرسہ بورڈ کی جانب سے نصاب کی کتابیں اور اس سے جڑی ہوئی دیگر چیزیں تقسیم کیں۔ انہوں نے پانچویں، آٹھویں اور دسویں میں امتیازی گریڈ حاصل کرنے والے دونوں مدرسوں کے طلبہ و طالبات کو انعامات و اسناد سے سرفراز کیا۔
محترمہ مہرالنساء ٹاک نے اس بات پر بہت خوشی کا اظہار کیا کہ مارواڑ مسلم ایجوکیشنل اینڈ ویلفیئر سوسائٹی کے زیرِاہتمام جدید اور قدیم تعلیم سے یکساں طور پر نئی نسل کو بہرہ مند کیا جا رہا ہے اور علم کی دوئی کو مٹایا جا رہا ہے۔ اس موقعے پر محترمہ ٹاک کااستقبال کرتے ہوئے سوسائٹی کے جنرل سکریٹری جناب محمد عتیق صاحب نے کہا کہ ان کی صدارت میں مدرسہ بورڈ نے نئے ریکارڈ بنائے اور سرکاری سطح پر مدارس کو ایک باعزت حیثیت دلانے میں بڑی کامیابی حاصل کی۔
mehrunnisa
راجستھان مدرسہ بورڈ کی صدر محترمہ مہرالنساء ٹاک کا استقبال کرتے ہوئے شرکاء
اس تقریب کی صدارت کرتے ہوئے مولانا آزاد یونیورسٹی کے وائس چانسلر پدم شری پروفیسراخترالواسع نے کہا کہ مدرسے ہمیشہ سے صرف دینی تعلیم کا مرکز نہیں تھے بلکہ انگریزوں نے اپنے نظامِ تعلیم کو مسلط کرنے کے لیے مدرسوں کے ہمہ جہتی شمولیت پسند نظام اور نصاب کو برباد کرنے کی کوشش کی۔ انہوں نے کہا کہ جن لوگوں نے اس ملک کو قطب مینار کی بلندی، تاج محل کا حسن، لال قلعے کی پختگی اور شاہ جہانی مسجد کا تقدس عطاکیاوہ مدرسوں ہی کی پیداوار تھے۔ اگر مدرسے کل ایسے لوگ پیدا کر سکتے تھے تو آج کیوں نہیں؟ آپ ان کی گھیرابندی کرنے کے بجائے انہیں مناسب آزادی اور مواقع فراہم کریں۔ پروفیسرواسع نے مزید کہا کہ مدرسے ہماری دینی زندگی میں رہنمائی کے لیے نا گزیر ہیں۔
اس تقریب میں طیب انصاری، کوآرڈینیٹر راجستھان مدرسہ بورڈ جودھپور، ڈسٹرکٹ مائنرٹیز ویلفیئر آفیسر حنیف خان نے بھی اپنے خیالات کا اظہار کیا جبکہ شکریہ کی تجویز مارواڑ مسلم ایجوکیشنل اینڈ ویلفیئر کے سابق صدر شبیر احمد خلجی نے پیش کی اور نظامت کے فرائض محمد امین نے انجام دیے۔ اس تقریب کے اہم شرکاء میں حاجی عباد اللہ قریشی، نظیر خاں، حاجی محمد اسحق، عبدالرؤف انصاری، فیروز قاضی، محمد ہارون، حنیف لوہانی، محمد اسمٰعیل، محمد ذکی، نثار خلجی، نوشاد علی، یونس چوبدار، نعیم سلاوٹ،رفیق لوہار، عمر چوہان اور محمد رفیق خان شامل تھے۔
Share Article

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *