جماعت اسلامی ہند کے تحت نارنول ہریانہ میں دینی تعلیمی کیمپ منعقد

deeni-camp
نئی دہلی :جماعت اسلامی ہند حلقہ دہلی و ہریانہ کے تحت نارنول ہریانہ میں دینی تعلیمی کیمپ منعقد ہوا جس میں بڑی تعداد میں طلبہ نے بڑھ چڑھ کر حصہ لیا ۔اس پروگرام میں طلبہ کو دینی سے واقفیت کے لئے باضابطہ نصابی شکل میں انہیں اسلام کی تمام طرح کی معلومات فراہم کی گئی جس میں قرآن کے پیغام حق کو سمجھ کر پڑھنے کے لئے طلبہ میں شعور بیدار کیا گیا اور انہیں تاریخ اسلام سے لیکر سیرت کے تمام پہلوؤں کی تعلیم دی گی ۔اس کے علاوہ نماز ،روزہ ،زکوۃ ،حج اور توحید کی مکمل تعلیم دی گئی ۔اسلام کے نظام کو سمجھنے اوراپنی زندگی کو اسلام کے مطابق گزارنے کی تعلیم کے ساتھ ساتھ انہیں معاشرے کو ایک اسلامی معاشرہ بنانے کے جانب تعلیم دی گئی ۔الحمد اللہ طلبہ نے تمام نصابوں کا بغور مطالعہ کیا اور ان کے مطالعہ کو جانچنے کے لئے ایک امتحان سے گزارا گیا جس میں اسلام سے متعلق ہر طرح کے سوالات کئے گئے ۔الحمد للہ یہ دینی اور تعلیمی کیمپ انتہائی کامیاب رہا اور تمام طلبہ نے صحیح صحیح جواب لکھ کر یہ ثابت کردیا کہ انہوں نے اس کیمپ کے مقاصد کو پورا کردیا ہے ۔بہترین تعلیمی مظاہرہ کرنے والے طلبہ کو انعامات سے نوازا گیا۔جماعت اسلامی ہند گرمیوں کی چھٹیوں میں اس طرح کے دینی تعلیمی کیمپ پورے ملک میں منعقد کرتی جس کے ذریعے ملت کے نوجوانوں کے اندر دینی شعور بیدار کی جاتی ہے ۔
اس موقع پر دہلی و ہریانہ امیر حلقہ عبدالوحید نیاختتامی خطاب کرتے ہوئے کہا کہ گرمیوں کی چھٹیوں میں زیادہ والدین اپنے بچوں کو دیگر جگہوں پر گھومانے کا اور سیر و تفریح کا پروگرام بناتے ہیں جس سے طلبہ کو خوشی تو ضرور ملتی ہے لیکن انہیں اسلام کی تعلیمات کو جاننے کا موقع نہیں ملتا ہے چونکہ آج کے ماحول میں والدین بڑے بڑے اسکولوں میں بچوں کو تعلیم دینے کا نظم کرتے ہیں جہاں اسلام کی تعلیمات کی ایک کرن بھی موجود نہیں ہے ۔ایسے طلبہ کو اسلامی تعلیم سے آراستہ کرنے کے لئے جماعت اسلامی ہند دینی تعلیمی کیمپ کا اہتمام کرتی ہے جس کے ذریعے طلبہ کو دینی تعلیم دینے کا اہتمام کیا جاتا ہے ۔ انہوں نے طلبہ کو خطاب کرتے ہوئے کہا کہ جس تعلیم کو آپ نے اس کیمپ حاصل کی ہے اسے اپنی زندگیوں میں نافذ کرنے کی ضرورت ہے ۔یہی اصل کامیابی جس کے ذریعے دین اور دنیا دونوں جگہوں میں کامیابی حاصل کی جاسکتی ہے ۔اس موقع پر مولانا طاہر امین نے بھی بچوں کو مفید مشوروں سے نوازا ۔
Share Article

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *