علی گڑھ کی ادبی و ثقافتی تنظیم ’’ بزمِ ادب خواتین‘‘ کی خصوصی تعزیتی و ادبی نشست کا انعقاد 

Begum-Asim-Izhar
علی گڑھ مسلم یونیورسٹی کے شعبۂ اردو کی سابق سربراہ پروفیسر ثریا حسین، بین الاقوامی شہرت یافتہ اردو کے ادیب اور طنزو مزاح نگار مشتاق احمد یوسفی اور علی گڑھ مسلم یونیورسٹی کے عبداللہ اسکول کی انگریزی کی استاد عزیزہ حنفی کے سانحۂ ارتحال پر علی گڑھ کی ادبی و ثقافتی تنظیم ’’ بزمِ ادب خواتین‘‘ کی ایک خصوصی تعزیتی و ادبی نشست محترمہ نسرین کامران کی رہائش گاہ پر منعقد ہوئی جس کا آغاز محترمہ ریحانہ محسن کی تلاوتِ کلامِ پاک اور ترجمہ سے ہوا۔
مشتاق احمد یوسفی کو خراجِ عقیدت پیش کرتے ہوئے بیگم آصف اظہار علی نے کہا کہ ان کے چلے جانے سے ایک دور کا خاتمہ ہوگیا۔ ہند و پاک تنازعات کے باوجود ان کی شخصیت سرحد کے دونوں اطراف انتہائی مقبول تھی۔ انہوں نے اپنی سابقہ استاد، اعلیٰ تعلیم یافتہ اور کئی کتب کی مصنفہ پروفیسر ثریا حسین اور مرحومہ عزیزہ حنفی کو بھی حد درجہ مغموم انداز میں خراجِ عقیدت پیش کیا۔
محترمہ ڈاکٹر فائزہ عباسی نے اردو کے مشہور رسالے’’ پاکیزہ آنچل‘‘ کے مدیر خالد مصطفےٰ صدیقی کے سانحۂ ارتحال پر اپنا ایک تفصیلی مضمون پیش کیا جبکہ بیگم صبیحہ سنبل نے اپنی تازہ غزل پیش کی۔ بیگم شمیم آصف نے’’ عید‘‘ پر اپنا ایک جامع مضمون اور معروف ادیبہ افشاں ملک نے اپنا تازہ افسانہ ’’ صوفیہ ہومز‘‘ پیش کیا۔ آخر میں کہکشاں خاں نے’’ عورتوں کے لئے جمعہ کی اہمیت‘‘ مضمون، سمرین جہاں نے نظم’’آج کی عید‘‘ اور انجم قدوائی نے افسانہ ’’ کاغذ کی ناؤ‘‘ نے پیش کیا۔ نرجس حسین نے شمیم جے پوری اور جگر مرادآبادی کی غزلیں اور بیگم سہیل معین نے مشہور شعراء کا کلام پیش کیا۔
Share Article

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *