آبروریزی معاملہ:خودساختہ باباداتی مہاراج میڈیاکے سامنے آئے،جانئے کیاکہا

daati-maharaj
ریپ کے الزام لگنے کے بعد سے فرارچل رہے بانی خودساختہ باباداتی مہاراج آخرکارمیڈیاکے سامنے آئے۔شنیدھام کے بانی داتی مہاراج نے خاموشی توڑدی ہے۔ انہو ں نے کہاکہ جوبھی الزام لگے ہیں وہ آپ کے سامنے ہیں۔ میں اس بیٹیاپرالزام نہیں لگاؤں گا۔وہ میری بیٹی ہے اورمیں نے غلطی کی ہے تو پولس جانچ کرے گی اورجانچ میں تعاون کیلئے پوری طرح سے تیارہوں۔انہوں نے کہاکہ کسی سازش کے تحت انہیں پھنسایاجارہاہے ۔اس کے علاوہ انہو ں نے کہاکہ اگرمیراجرم ثابت ہواتومیں پھانسی کیلئے تیارہوں۔اس معاملے میں قانون اپنا کام کررہاہے۔پانچ پوری ہونے کے بعدوہ آگے کی کارروائی کریں گے ۔داتی مہاراج نے بتایاکہ وہ دہلی سے باہرہیں۔انہو ں نے کہاکہ کچھ کاروباریوں کوان کی تنظیم سے تنازع تھا۔اسی کولیکریہ سازش اورتنازعہ کھڑاکیاگیاہے۔انہو ں نے کہاکہ ایشورسب کچھ دیکھ رہاہے۔
اس سے قبل داتی مہاراج اوراس کے دوشاگردوں کے ذریعہ لڑکی سے ریپ معاملے میں کرائم برانچ بدھ کومتاثرہ لڑکی سے قریب تین گھنٹے تک پوچھ تاچھ کی۔اس سے چانکیہ پوری واقع انٹراسٹیٹ سیل میں پوچھتاچھ کی گئی ۔اس دوران اسکے بیان بھی درج کئے گئے۔وہیں بدھ کوکرائم برانچ کی ٹیم داتی مہاراج کوتلاش نے کیلئے راجستھان بھی گئی تھی، مگروہ آشرم میں نہیں ملا۔اس کے بعدپولس نے اس کے پوچھ تاچھ میں شامل ہونے کیلئے جاری نوٹس آشرم کے لوگوں کوسونپ دیاتھا۔
خیال رہے کہ راجستھان کی 25سالہ لڑکی نے خودساختہ بابا داتی مہاراج اوراس کے شاگردوں پرعصمت دری کا الزام لگایاتھا۔یہ معاملہ جنوبی دہلی کے فتح پور بیری تھانہ میں درج کرایاگیاتھا۔ لڑکی نے پولس کوبتایاکہ وہ قریب ایک دہائی سے مہاراج کی پیروکارتھی، لیکن مہاراج اورشاگردوں کے ذریعہ بار بار ریپ کئے جانے کے بعد وہ اپنے گھرراجستھان لوٹ گئی تھی۔
Share Article

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *