لالو پرساد کی عبوری ضمانت میں 6 ہفتے کی توسیع

lalu
بہار کے سابق وزیر اعلی اور آر جے ڈی سربراہ لالو پرساد یادو کو جھارکھنڈ ہائی کورٹ سے ایک مرتبہ پھر بڑی راحت مل ہے۔ آج (جمعہ )عدالت نے ان کی عبوری ضمانت کی مدت میں 6 ہفتہ کی توسیع کردی ہے۔ لالو اب 14 اگست تک ضمانت پر باہر رہیں گے۔چارہ گھوٹالے کے تین معاملوں سزاکاٹ رہے لالویادوکو14اگست 2018تک جیل سے باہررہنے کی چھوٹ مل گئی ہے۔عیاں رہے کہ گذشتہ دنوں لالویادوکی سنوائی پرکورٹ نے ان کی ضمانت کی مدت 3جولائی تک بڑھادی تھی ۔
لالو پرساد کی جانب سے سپریم کورٹ کے سینئر وکیل ابھیشیک منو سنگھوی اور چترنجن سنہا نے جسٹس اپریش کمار سنگھ کی عدالت میں دلائل پیش کئے۔ انہوں نے میڈیکل رپورٹ پیش کرتے ہوئے لالو پرساد کیلئے تین مہینے کی ضمانت کا مطالبہ کیا ، لیکن عدالت نے اس مطالبہ کو خارج کرتے ہوئے چھ ہفتے کی ضمانت دیدی۔ عدالت نے 10 اگست کو آر جے ڈی سپریمو کی صحت سے وابستہ میڈیکل رپورٹ پھر سے پیش کرنے کا حکم دیا ہے۔
سی بی آئی کے وکیل راجیو سنہا نے اپنا موقف پیش کرتے ہوئے کہا کہ اب ریمس میں بھی لالو پرساد یادو کا علاج کیا جاسکتا ہے ، اس لئے ضمانت کی مدت میں توسیع نہ کی جائے ، لیکن عدالت نے اس دلیل کو خارج کردیا۔
آج جمعہ کی صبح جسٹس اپریش کمار کی عدالت نے لالوکی عرضی پرسنوائی کی اورصحت کے تحت دی گئی عرضی کومنظوکرلیا۔معلوم ہوکہ بیماری کی جوہ سے لالویادوکو11مئی سے 6ہفتوں کی عبوری ضمانت ملی تھی۔اس کے بعدلالویادوعلاج کیلئے ممبئی اوربنگلوروگئے ۔علاج کے دوران ان کی بڑی بیٹی میسا، بیٹے تیج پرتاپ اوربہوایشوریہ ہمیشہ ان کے ساتھ تھے۔اس سے پہلے لالوپرسادبڑے بیٹے تیج پرتاپ کی شادی میں شامل ہونے کیلئے ایک پیرول پرباہرآئے تھے۔
Share Article

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *