ایمرجنسی:اسدالدین اویسی کا بی جے پی ترجمان سمبت پاتراکوکراراجواب

owaisi
ایمرجنسی کے 43سال پورے ہونے پربی جے پی ملک بھرمیں یوم سیاہ منارہی ہے۔ایمرجنسی پرآل انڈیامجلس اتحادالمسلمین کے قومی صدرورکن پارلیمنٹ اسدالدین اویسی نے بیان دیاہے۔ اسدالدین اویسی نے اے این آئی سے بات کرتے ہوئے کہاکہ ایمرجنسی، مہاتماندھی کاقتل، بابری مسجدکی شہادت ، 1984میں سکھوں کی نسل کشی اور2002میں گجرات میں کیاہوا،یہ کسی کوکبھی نہیں بھولناچاہئے۔انہو ں نے کہاکہ ایسے زمینی سانحے آزادہندوستان میں رونماہوناافسوسناک بات ہے، اسے کبھی نہیں بھولناچاہئے۔
وہیں بی جے پی ترجمان سمبت پاترانے اسدالدین اویسی کے بیان پرتنقیدکی ہے۔انہو ں نے کہاکہ آج کے سیاسی صورتحال میں مجھے یہ کہنے میں کوئی ہچکچاہٹ نہیں ہے کہ اویسی نئے جناح ہے۔ مسلمانو ں کواصل مسئلے سے دورکرنے اورانہیں توڑنے کیلئے وہ ہمیشہ پرجوش رہتے ہیں۔ان کی سیاست بیحدخطرناک ہے جسے وہ بارباردہرارہے ہیں۔
دوسری طرف سمبت پاترکے بیان پراسدالدین نے کراراجواب دیاہے۔ اسدالدین اویسی نے کہاکہ ’سمبت بچے ہیں، بچوں کے بارے میں نہیں بولناچاہتا۔اویسی نے کہاکہ ہمارامقابلہ ان سے نہیں ہے بلکہ سب سے اعلیٰ لیڈران سے ہے۔انہو ں نے کہاکہ میں کہناچاہوں گا کہ جب بڑے بات کرتے ہیں توبچوں کوبیچ میں دخل نہیں دیناچاہئے۔
قابل غور ہے کہ سابق وزیر اعظم اندرا گاندھی نے 25 جون، 1975 کو ملک میں ایمرجنسی لگا دیا تھا جو 21 ماہ تک چلا۔25 اور 26 جون کی درمیانی شب سے ایمرجنسی کا نفاذ عمل میں آیا تھا۔
Share Article

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *