سی ایم اروندکیجریوال کاسابق سی ایم شیلادکشت کوچیلنج

kejriwal-sheela
دہلی کے وزیراعلیٰ اروند کیجریوال نے کانگریس لیڈر اور دہلی کی سابق وزیراعلیٰ شیلا دکشت کو وزیراعظم نریندر مودی کے دوراقتدار میں ایک سال دہلی کی حکومت چلانے کا چیلنج دیا ہے۔ دہلی کو مکمل ریاست کا درجہ دینے کا وزیراعلیٰ اروند کیجریوال اور عام آدمی پارٹی کی وکالت پر شیلا دکشت نے مرکز کے تعاون سے حکومت چلانے کی نصیحت دی تھی۔ شیلا دکشت نے کہا کہ ان کے15سال کے مدت کارمیں کبھی مرکز یا لیفٹیننٹ گورنر کے ساتھ تنازعہ نہیں ہوا۔ کام نہ ہونے کے لئے یہ وجہ نہیں بتایا جاسکتا۔ عوام بہتر حکمرانی چاہتے ہیں۔ شکایتیں نہیں۔اس کے جواب میں وزیر اعلی اروند کجریوال اتنے ناراض ہوئے کہ انہوں نے مودی کے راج میں انہیں ایک سال حکومت کرنے کے چیلنج کردیا۔ عام آدمی پارٹی (آپ) حکومت نے جمعرات کو اسمبلی میں دہلی کو مکمل ریاست کا درجہ دینے کی قراردادکو منظور کیا تھا۔ مسز دیکشت نے دہلی کو مکمل ریاست کا درجہ ممکن نہ ہونے کی بات کرتے ہوئے کہا تھا کہ مرکز میں کسی بھی پارٹی کی حکومت ہو، دہلی کی حکومت کو اس کے ساتھ مل کر ہی کام کرنا ہو گا۔
دہلی میں لیفٹیننٹ گورنر کے عہدے پر چاہے نجیب جنگ رہے ہوں یا موجودہ انل بیجل، دہلی میں حکومت چلانے کے حق کو لے کر مسٹر کجریوال کی تکرار برابر چلتی رہی ہے۔ حکومت چلانے کے حقوق کا معاملہ عدالت تک پہنچا اور وہاں سے بھی مسٹر کجریوال کو جھٹکا بھی لگا۔دہلی ہائی کورٹ نے دارالحکومت میں لیفٹیننٹ گورنر کے انتظامی حقوق کو سب سے زیادہ ترجیحی قرار دیا ہے۔مسٹر کجریوال حکومت چلانے کے سلسلہ میں کانگریس کی سینئر لیڈر کے مشورہ سے کافی ناراض ہوئے۔ انہوں نے کہا’’شیلا جی، آپ کے دور میں عوام پانی اور بجلی کے بلوں سے ہی رورہے تھے۔سرکاری اسکولوں، اسپتالوں کا برا حال تھا۔پرائیویٹ اسکول منمانے فیس بڑھاتے تھے۔ ہم نے یہ سب ٹھیک کیا۔ آپ کا دور 10 سال مرکز میں آپ کی اپنی حکومت، آپ کے لیفٹیننٹ گورنر تھے. میں چیلنج کرتا ہوں ایک سال مودی راج میں دہلی چلا کے دکھا دیں۔‘‘
اس درمیان اروند کیجریوال نے دہلی کو مکمل ریاست کا درجہ دلانے کے سلسلے میں اتوار کو اپنے گھر پر وزرا اور ممبران اسمبلی و کارکنوں کی میٹنگ بلائی۔ جس کے بعد آپ کے سینئر لیڈر اور دہلی حکومت میں وزیر گوپال رائے نے کہا کہ دہلی کے لوگوں کو آزادی کے بعد بھی نصف حقوق ملے ہیں۔ دہلی کے ساتھ سوتیلا رویہ اختیار کیا جارہا ہے۔ چھوٹے چھوٹے کام کے لئے دہلی کے لوگوں کو پریشان کیا جارہا ہے۔ جس کے لئے ایک جولائی کو اندرا گاندھی انڈوراسٹیڈیم میں مکمل ریاست کے لئے کانفرنس ہوگا۔ اس میٹنگ میں ہی آگے کی پالیسی کا اعلان کیا جائے گا۔ واضح رہے کہ عام آدمی پارٹی نے2019کے لوک سبھا الیکشن کی پالیسی کے تحت دہلی کو مکمل ریاست کا درجہ دلانے کا مطالبہ تیز کردیا ہے۔
Share Article

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *